.

حوثی لیڈر نے قبائل کےنوجوانوں کو ’خائن‘ قرار دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں سرگرم حوثی باغی گروپ کے سربراہ عبدالملک الحوثی نے آئینی حکومت کی حمایت کرنے والے قبائلی نوجوانوں کو ’خائن‘ قرار دیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جمعہ کے روز حوثی لیڈر عبدالملک الحوثی نے مختلف محاذوں پر لڑنے والے فیلڈ کمانڈروں کے ایک اجلاس میں شرکت کی اور ان سے خطاب کیا۔ عبدالملک الحوثی کا کہنا تھا کہ تنظیم کے گڑھ سمجھے جانے والے صعدہ کے علاقے میں یمنی فوج کے خلاف بھرپور جنگ کی جائے اور سرکاری فوج کی پیش رفت روکی جائے۔

ذرائع کاکہنا ہے کہ عبدالملک الحوثی نے اجلاس کے دوران ایک سے زاید بار خبر دار کیا کہ حوثی ملیشیا قبائلی نوجوانوں پر اعتماد نہ کرے کیونکہ یہ اندر سے حکومت کے ساتھ ملے ہوئے ہیں اور ان کے ساتھ خیانت اور دھوکہ کرتے ہیں۔

مقامی اخبارات میں شائع ہونے والی خبروں میں کہا گیا ہے کہ حوثی لیڈر نے اجلاس میں اپنے کمانڈروں کو حکم دیا کہ محاذ جنگ پر پسپائی اختیار کرنے والوں کو قتل کردیا جائے، بالخصوص قبائلی نوجوانوں کے حوالے سے کسی قسم کی نرمی نہ برتی جائے کیونکہ وہ سرکاری فوج کے ساتھ مل کر ان کے خلاف لڑائی میں شامل ہوسکتے ہیں۔

ذرائع کے مطابق حوثی لیڈر نے ہدایت کی کہ قبایل کے ساتھ پہلے تو احتیاط کے ساتھ برتاؤ کیا جائے کیونکہ ان سے کسی بھی وقت خیانت اور دھوکہ دہی کا امکان ہے اور وہ کسی بھی وقت اپنے مفادات بدل سکتے ہیں۔

حوثی لیڈر عبدالملک الحوثی کی جانب سے یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب ملک میں حوثی باغیوں کے گرد گھیرا تنگ ہو رہا ہے۔ یمن کی سرکاری فوج، مزاحمتی ملیشیا اور عرب اتحادی فوج نے حوثیوں کے گڑھ سمجھے جانے والی صعدہ گورنری کا بھی گھیراؤ کرلیا ہے اور سرکاری فوج تیزی کے ساتھ پیش قدمی کررہی ہے۔