.

ولی عہد اور فرانسیسی صدر میں ملاقات کی تفصیلات جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز فرانس کے دورے کے دوران اہم شخصیات سے ملاقاتیں جاری رکھے ہوئے ہیں۔ گذشتہ روز انہوں نے فرانسیسی صدر عمانوئل ماکروں اور وزیراعظم اڈوار فیلپ سے الگ الگ ملاقات کی۔

آج منگل کو بھی ولی عہد فرانس کی اہم شخصیات سے ملاقاتوں کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔ آج کے شیڈول میں ان کی صدر ماکروں کے ساتھ ایک اور ملاقات بھی شامل ہے۔

دونوں ملکوں کے درمیان نئی تزویراتی شراکت کے حوالے سے ہونے والی بات چیت کے دوران فرانسیسی صدر ولی عہد اور دیگر مہمانوں کے اعزازمیں عشائیہ بھی دیں گے۔

فرانسیسی صدر کو دورہ سعودی عرب کی دعوت

فرانسیسی ایوان صدر میں ہونے والی سرکاری ملاقاتوں میں دو طرفہ تعلقات کا فروغ اہم ترین ایجنڈا ہے۔ العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اتوار کو الیزے پیلس میں ہونے والی ملاقات میں صدر ماکروں اور شہزادہ محمد بن سلمان نے دوطرفہ تجارتی تعاون کے فروغ اور سرمایہ کاری کے مواقع بڑھانے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ بعد ازاں اتوار کی شام اللوفر میوزیم کے ریشیلیو ہوٹل میں عشائیہ بھی دیا گیا۔

فرانسیسی ایوان صدر کے ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک ایک نئی اسٹڑیٹیجک دستاویز کی تیاری پر کام کررہے ہیں جس میں باہمی تعاون کے کئی سمجھوتے شامل ہیں۔ اس دستاویز پر دستخط کے لیے صدر ماکروں رواں سال سعودی عرب کا خصوصی دورہ بھی کریں گے۔

ذرائع کاکہناہے کہ صدر میکروں اور ولی عہد کے درمیان ملاقات تین گھنٹے جاری رہی۔ ایک گھنٹہ وہ ایک نمائش میں ایک ساتھ رہے جب کہ دو گھنٹے ریشیلیو ہوٹل میں باہمی دلچسپی کے امور پرتبادلہ خیال کیا۔

دوستانہ ماحول نے ذاتی تعلقات مستحکم کیے

فرانسیسی ایوان صدر کے ذریعے کا کہنا ہے کہ ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز اور فرانسیسی صدر نے انگریزی میں بات چیت کی۔ دونوں رہ نماؤں کی ایک دوسرے سے دوستانہ ماحول میں بات چیت نے ذاتی تعلقات کو بھی مضبوط کیا۔

فرانسیسی صدر عمانوئل ماکروں نے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے تزویراتی مذاکرات کی خواہش کا اظہار کیا تاکہ سعودیہ کے ساتھ نئے اتحاد کی بناء ڈالی جاسکے۔ الیزے پیلس کے ذریعے کے مطابق صدر ماکروں سعودی عرب کو اپنا اہم ترین اتحادی خیال کرتا ہے اور دونوں ملکوں کا ویژن ایک ہی ہے۔ صدر ماکروں نے کہا کہ ان کا ملک خطے کے تمام ممالک امارات، سعودی عرب، ایران اور قطرکے ساتھ مذاکرات کا حامی ہے۔

دہشت گردی کے خلاف جنگ کے اتحادی

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اور فرانسیسی صدر عمانوئل ماکروں کےدرمیان انسداد دہشت گردی اور عالمی امن پر بھی بات چیت کی گئی۔ ولی عہد نے یقین دلایا کہ سعودی عرب 26 اپریل کو پیرس میں ہونے والی انسداد دہشت گردی کانفرنس میں اپنا وفد بھی بھیجے گا۔