قطری دہشت گرد کے بیٹے کی شادی پر مقامی اخبارات کے تہنیتی پیغامات!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

قطر میں حیران کر دینے والے اچھوتے واقعات سامنے آنے کا سلسلہ جاری ہے۔ اس حوالے سے تازہ ترین پیش رفت میں قطر کے سب سے بڑے اخبار میں ملکی سکیورٹی حکام کو مطلوب اہم ترین دہشت گرد عبدالرحمن النعیمی کے بیٹے کی شادی پر مبارک باد کا پیغام شائع ہوا ہے۔ النعیمی کا نام اُس فہرست میں نمایاں ترین ہے جو کچھ عرصہ قبل قطری وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کی گئی۔ فہرست میں 11 قطری شہری اور بعض قطری ادارے بھی شامل ہیں۔

قطر کے روزنامے "الرايۃ" نے اپنی 11 اپریل کی اشاعت میں القاعدہ تنظیم کی فنڈنگ کرنے والے ایک اہم ترین شخص کے بیٹے کی شادی پر مبارک باد کا خصوصی پیغام شائع کیا۔ پیغام میں تحریر کیا گیا کہ "ڈاکٹر عبدالرحمن النعیمی آج النعیم کے علاقے میں ایک شادی ہال میں اپنے بیٹے عبداللہ کی شادی کی تقریب منعقد کر رہے ہیں ... ڈھیروں مبارک باد"۔

مذکورہ قطری دہشت گرد عبدالرحمن النعیمی کے بیٹوں کے سوشل میڈیا صفحات پر عبداللہ کی شادی کی کئی تصاویر نمایاں طور پر موجود تھیں جن میں متعدد قطری شخصیات نظر آئیں۔ حاضرین میں عبداللہ السلیطی شامل ہیں جو اپنا تعارف آئل ایڈوائزر، قطری اخبار الرایۃ کے کالم نگار اور قطری روزنامے "الشرق" کے سابق چیف ایڈیٹر کے طور پر کراتے ہیں۔

ایک تصویر میں السلیطی بین الاقوامی سطح پر مطلوب دہشت گرد النعیمی اور اس کے دولہا بیٹے عبداللہ کے درمیان موجود ہیں۔

عبدالرحمن النعیمی کو 2014ء میں امریکی وزارت خزانہ نے زیرِ پابندی افراد کی فہرست میں شامل کر لیا تھا۔ برطانوی حکومت بھی انسانی حقوق کی تنظیم "الکرامہ" (جس کا صدر دفتر جنیوا میں ہے) کے سربراہ النعیمی پر شدت پسند جماعتوں کی فنڈنگ کے شبہے میں پابندی عائد کر چکی ہے۔ برطانیہ میں اس کے تمام اثاثوں کو منجمد کر دیا گیا ہے اور برطانیہ میں کسی بھی بینک کی شاخ کے ساتھ اُس کے معاملات کو ممنوعہ قرار دیا گیا ہے۔

واشنگٹن کے مطابق النعیمی 10 برس سے زیادہ عرصے سے شام، عراق، صومالیہ اور یمن میں القاعدہ تنظیم کو مالی مدد اور ساز وسامان فراہم کر رہا ہے۔

امریکی وزارت خزانہ نے دسمبر 2014ء میں النعیمی پر پابندی عائد کر دی تھی۔ وزارت خزانہ کے مطابق النعیمی نے مخصوص مدت تک کے دوران عراق میں القاعدہ تنظیم کو 20 لاکھ ڈالر سے زیادہ کی رقم منتقل کی۔ وزارت نے مزید بتایا کہ النعیمی نے 2013ء میں القاعدہ کو 6 لاکھ ڈالر پیش کیے۔ النعیمی نے 2012ء کے وسط میں صومالیہ میں حرکت الشباب کو 2.5 لاکھ ڈالر کی رقم بھجوائی۔

النعیمی 2004ء میں قائم ہونے والی غیر سرکاری تنظیم "الکرامہ آرگنائزیشن" کا نگراں ہے۔ یہ تنظیم انسداد دہشت گردی کے خواہش مند ممالک سعودی عرب، امارت، بحرین اور مصر کی جانب سے جاری دہشت گرد عناصر اور اداروں کی فہرست میں شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں