.

شام : حلب کے نواح میں ایرانی ملیشیاؤں کے گڑھ میں "پراسرار" دھماکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں انسانی حقوق کے نگراں گروپ المرصد نے ہفتے کی شام بتایا کہ حلب کے جنوبی نواح میں شامی حکومت کی فوج اور اس کی ہمنوا ملیشیاؤں کے زیر کنٹرول علاقے جبلِ عزان میں ایک زور دار دھماکا سنا گیا۔

العربیہ نیوز چینل کے ساتھ رابطے میں المرصد نے بتایا کہ دھماکا جس علاقے میں ہوا وہاں شامی حکومت کی ہمنوا ایرانی اور افغانی ملیشیاؤں کے علاوہ حزب اللہ کا بھی وجود ہے۔ اس سلسلے میں موصول ہونے والی معلومات کے مطابق جبل عزان میں دھماکے سے قبل فضا میں لڑاکا طیارے یا میزائل نظر آئے۔

المرصد کے مطابق دھماکے کے نتیجے میں جانی نقصان کی طلاعات ہیں۔

المرصد کے سربراہ رامی عبدالرحمن نے العربیہ نیوز چینل کے ساتھ خصوصی گفتگو کے دوران اس امر کی تصدیق کی ہے کہ دھماکا حلب کے نواح میں اُس علاقے میں ہوا جہاں ایرانی ملیشیائیں تعینات ہیں۔

اس حوالے سے کئی شامی کارکنان نے بتایا ہے کہ یہ کارروائی ایک اسرائیلی طیارے نے کی۔ ادھر اسرائیلی میڈیا کا کہنا ہے کہ شام کے شہر حلب کے نزدیک ایک ایرانی عسکری کیمپ کو نشانہ بنایا گیا۔

دوسری جانب لبنانی ملیشیا حزب اللہ نے ہفتے کی شب ایک بیان میں حلب کے جنوبی نواح میں کسی اسرائیلی حملے کی تردید کی ہے۔