کیمیائی معائنہ کار آج دوما میں داخل نہیں ہو سکیں گے : ذرائع اقوام متحدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں اقوام متحدہ کے ایک ذریعے نے بتایا ہے کہ "تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار" کے معائنہ کاروں کا بدھ کے روز شام کے علاقے دوما میں داخل ہونا ممکن نظر نہیں آتا۔ ذریعے کے مطابق منگل کے روز پہلی ٹیم دوما میں داخل ہوئی تھی تاہم تنظیم کے ماہرین داخل نہیں ہوئے۔

تنظیم کے معائنہ کار دوما میں کیمیائی حملے کے ٹھکانے کا دورہ کرنے کے واسطے رواں ہفتے کے آغاز پر دمشق پہنچے تھے۔

اقوام متحدہ میں شام کے مندوب بشار الجعفری اس سے پہلے یہ کہہ چکے ہیں کہ تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار کے تحقیق کار بدھ کے روز دوما کا دورہ کریں گے تا کہ کیمیائی ہتھیاروں کے حملے کی باقیات تلاش کی جا سکیں۔

الجعفری کے مطابق دوما میں داخل ہونے کا فیصلہ اقوام متحدہ کی سکیورٹی ٹیم اور تنظیم برائے ممانعت کیمیائی ہتھیار سے وابستہ ہے۔ مندوب نے دعوی کیا کہ شامی حکومت نے اقوام متحدہ کی ٹیم کے کام کو آسان بنانے کے لیے تمام مطلوبہ اقدامات کیے ہیں۔

دوسری جانب امریکا اور فرانس نے دوما میں بین الاقوامی تحقیق کاروں کے داخلے میں تاخیر پر اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے شامی حکومت اور روس پر شواہد مٹانے کا الزام عائد کیا ہے۔

امریکی وزارت خارجہ نے منگل کے روز اعلان کیا تھا کہ اس کے پاس اس طرح کی معلومات ہیں کہ شامی حکومت نے دوما پر کیمیائی حملے میں کلورین اور سریرین گیسوں کا استعمال کیا۔

یاد رہے کہ رواں ماہ سات اپریل کو شامی حکومت کی جانب سے زہریلی گیسوں کے ذریعے ہونے والے حملوں میں کم از کم 100 شہری جاں بحق ہو گئے جب کہ سیکڑوں بچے اور خواتین کا دم گھٹ گیا۔

مسلح تنظیم جیش الاسلام نے شامی حکومت پر الزام عائد کیا ہے کہ اس نے مشرقی غوطہ میں شہریوں پر زہریلے کیمیائی مواد کے حامل بیرل بم گرائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں