غزہ کی سرحد پر اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے دو فلسطینی شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی کی مشرقی سرحد پر حق واپسی کے لیے احتجاج کرنے والے فلسطینیوں پر اسرائیلی فوج نے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں کم سے کم دو فلسطینی شہید اور متعدد زخمی ہوگئے۔

فلسطینی وزارت صحت کے ترجمان اشرف القدرہ نے بتایا کہ شمالی غزہ میں جبالیا پناہ گزین کیمپ کےقریب ہزاروں کی تعداد میں فلسطینیوں نے ’حق واپسی‘ کے لیے ریلی نکالی۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج نے مظاہرین پر سیدھی گولیوں سے فائرنگ کی، آنسوگیس کا بے دریغ استعمال کیا اور دھاتی گولیوں سے بھی مظاہرین کو نشانہ بنایا۔

اشرف القدرہ کے مطابق اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے 25 سالہ فلسطینی احمد نبیل ابو عقل سر میں گولی لگنے سے شہید اور متعدد زخمی ہوگئے۔ زخمی ہونے والے دو دیگر فلسطینیوں کے سروں میں گولیاں لگی ہیں جنہیں اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق مشرقی غزہ میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے ایک اور فلسطینی شہری کے مارے جانے کی اطلاعات ہیں تاہم اس کی شناخت نہیں کی جاسکی ہے۔

قبل ازیں جمعہ کو علی الصباح اسرائیلی ڈرون طیاروں کی مدد سے غزہ کی سرحد پر پمفلٹ گرائے گئے جن میں فلسطینیوں کو خبردار کیا گیا کہ وہ سرحدی باڑ کی طرف بڑھنے سے سختی سے گریز کریں۔

خیال رہے کہ فلسطینی 30 مارچ سے حچھ ہفتوں پر مشتمل حق واپسی کی تحریک جاری رکھے ہوئےہیں۔ اس تحریک کے دوران اب تک تین درجن فلسطینی شہید اور ہزاروں کی تعداد میں زخمی ہوچکے ہیں۔ فلسطینی ہرجمعہ کو مشرقی سرحد کی طرف مارچ کرتے ہیں۔ اس تحریک کا آج چوتھا جمعہ ہے۔ ہزاروں فلسطینی مشرقی غزہ پر خیمہ زن ہیں جو روزانہ کی بنیاد پر ریلیاں نکالتےہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں