.

او پی سی ڈبلیو کے اسلحہ انسپکٹروں نے دوما سے نمونے حاصل کر لیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

نیدر لینڈز (ہالینڈ) میں قائم تنظیم برائے امتناع کیمیائی ہتھیار (او پی سی ڈبلیو) کے معائنہ کاروں کی ایک ٹیم نے ہفتے کے روز شام کے دارالحکومت دمشق کے نواح میں واقع شہر دوما کا دورہ کیا ہے۔اس نے وہاں 7 اپریل کو کیمیائی ہتھیاروں کے حملے کی جگہ کا معائنہ کیا ہے اور نمونے اکٹھے کرلیے ہیں۔

او پی سی ڈبلیو نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ٹیم اب ان نمونوں کا تجزیہ کرے گی اور اس کے بعد یہ فیصلہ کرے گی کہ آیا اس کو دوبارہ مشرقی الغوطہ واقع شہر دوما میں مزید معلومات کے حصول کے لیے جانے کی ضرورت ہے یا نہیں ۔

ٹیم یہ نمونے واپس نیدر لینڈز بھیجے گی اور پھر تنظیم سے وابستہ لیبارٹریوں کو تجزیے کے لیے بھیجا جائے گا۔بیان کے مطابق نمونے کے تجزیے، دوسری معلومات اور وہاں سے حاصل کردہ مواد کی بنیاد پر یہ مشن ایک رپورٹ مرتب کرے گا اور پھر اس کو تنظیم کے رکن ممالک کو پیش کرے گا۔

اوپی سی ڈبلیو شام میں جاری خانہ جنگی کے دوران میں 2014ء سے زہریلے کیمیکلز کے استعمال کی تحقیقات کررہی ہے۔اس کے معائنہ کار گذشتہ کئی روز سے دوما پہنچنے کی کوشش کررہے تھے لیکن ان کی ایک ہراول ٹیم پر 17 اپریل کو حملہ کردیا گیا تھا،اس کے بعد ان کی روانگی میں تاخیر کردی گئی تھی۔

او پی سی ڈبلیو کی ٹیم اس بات کے تعیّن کی کوشش کرے گی کہ آیا دوما میں کیمیائی ہتھیار استعمال کیے گئے ہیں ۔تاہم یہ ہتھیار تنازع کے کس فریق نے استعمال کیے ہیں ،اس کا تعیّن کرنا اس کے مینڈیٹ میں شامل نہیں ہے۔