.

مصر : شمالی سیناء میں جھڑپوں میں تین فوجی اور 30 انتہا پسند ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے شورش زدہ جزیرہ نما سیناء میں گذشتہ ایک ہفتے کے دوران میں جھڑپوں اور سکیورٹی فورسز کی کارروائیوں میں تین فوجی اور تیس مشتبہ انتہا پسند ہلاک ہوگئے ہیں ۔

مصری فوج نے بدھ کو ایک بیان میں ان ہلاکتوں کی اطلاع دی ہے۔ مصری سکیورٹی فورسز شمالی سیناء اور ملک کے دوسرے علاقوں میں 9 فروری سے ’’ سیناء 2018ء ‘‘ کے نام سے جنگجوؤں اور انتہا پسندوں کے خلاف بڑی کارروائی کررہی ہیں ۔اس میں اب تک کم سے کم 200انتہا پسند جنگجو اور 33 سرکاری فوجی ہلاک ہوچکے ہیں ۔

انتہا پسندوں کے مہلوکین میں شمالی سیناء میں داعش کا ایک مرکزی کمانڈر ناصر ابو زاقل بھی شامل ہے۔مصری فوج نے گذشتہ ہفتے اس کی ہلاکت کا اعلان کیا تھا۔اس آپریشن کے دوران میں 170 سے زیادہ جہادیوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ جولائی 2013ء میں مصر کے پہلے منتخب صدر محمد مرسی کی حکومت کے خاتمے کے بعد سے داعش سے وابستہ گروپ نے اس علاقے میں سرکاری سکیورٹی فورسز پر بیسیوں تباہ کن بم حملے کیے ہیں۔شمالی سیناء میں داعش کے علاوہ متعدد اور جنگجو گروپ بھی مصری سکیورٹی فورسز کے خلاف برسرپیکار ہیں اور ان جنگجو گروپوں کے حملوں میں سیکڑوں فوجی اور پولیس اہلکار ہلاک ہوچکے ہیں۔