ایرانی رجیم ناقابل اعتماد، مذاکرات ناممکن ہیں: خالد بن سلمان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا میں متعین سعودی عرب کے سفیر شہزادہ خالد بن سلمان نے کہا ہے کہ ایرانی رجیم بین الاقوامی قوانین کی پامالیوں کی مرتکب ہے لہٰذا اس اس کے ساتھ اعتماد سازی کے اقدامات اور مذاکرات بہت مشکل ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ’ٹوئٹر‘ پر پوسٹ کردہ ایک بیان میں شہزادہ خالد بن سلمان نے لکھا کہ جب ایران کے سامنے خطے میں اس کی کھلے عام مداخلت کے ثبوت پیش کیے جاتے ہیں تو وہ ان کا انکار کر دیتا ہے اور یہ دعویٰ کرتا ہے کہ یہ ثبوت جعلی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ایران جب تک بین الاقوامی قوانین کی پامالیوں کا سلسلہ بند کر کے خطے میں مداخلت سے باز نہیں آتا اس پر اعتماد کیا جا سکتا ہے اور نہ ہی مذاکرات ہو سکتے ہیں۔

سعودی سفیر کا یہ بیان اقوام متحدہ میں سعودی عرب کے مندوب عبداللہ المعلمی کے اس بیان کے بعد سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے ایران کی دشمنانہ سرگرمیوں کی روک تھام کے لیے سلامتی کونسل کا فوری اجلاس بلانے کا مطالبہ کیا تھا۔

نیویارک میں سلامتی کونسل کے اجلاس سے خطاب میں سعودی سفیر نے کہا کہ ایران شام اور یمن میں اپنی حمایت یافتہ ملیشیاؤں کی مسلسل مدد کررہا ہے۔ شام میں دہشت گردی کے لیے ایران کی طرف سے لبنانی دہشت گرد تنظیم حزب اللہ کو بھرپور مدد مل رہی ہے۔ یمن کے حوثی باغی ایران سے حاصل کردہ ہتھیار اور بیلسٹک میزائل سعودی عرب کے خلاف استعمال کررہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں