بشار الاسد کی طرف سے اپنے بھائی ماہر کا سینئر فوجی عہدے پر تقرّر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شام کے صدر بشار الاسد نے بدھ کے روز جاری ایک فیصلے میں اپنے بھائی بریگڈیئر جنرل ماہر کو اپنے ریپبلکن گارڈز کے فورتھ آرمرڈ ڈویژن کا کمانڈر مقرر کیا ہے۔

واضح رہے کہ فورتھ ڈویژن شامی حکومت کے پاس باقی رہ جانے والی طاقت ور ترین عسکری ٹکڑیوں میں سے ہے۔ اس سے قبل یہ غیر سرکاری طور پر بشار کے بھائی ماہر کے زیر قیادت تھی کیوں کہ وہ مذکورہ ڈویژن کے صرف ایک بریگیڈ کا کمانڈر تھا۔

فورتھ ڈویژن کی تاسیس سابق صدر حافظ الاسد کے دور میں سامنے آئی۔ حافظ کے بھائی اور نائب رفعت نے اس وقت ڈویژن کی براہ راست کمان سنبھالی۔ دارالحکومت دمشق کی حفاظت اس ڈویژن کا بنیادی مشن ہے۔

اس ڈویژن نے 2011ء میں شروع ہونے والی عوامی انقلابی تحریک کے خلاف کریک ڈاؤن کے دوران انقلابیوں کے زیر انتظام علاقوں میں بم باری، قتل اور تباہی کی کارروائیوں میں حصّہ لیا۔

روس نے فورتھ ڈویژن کو جدید ٹینکوں اور مختلف میزائل ہتھیاروں سے لیس کیا ہے۔ اس کے لیے مالیاتی میزانیے کے دروازے بھی کھلے ہوئے ہیں۔

شام میں ایران کی ایک ملیشیا "امام حسین بریگیڈ" بھی فورتھ ڈویژن کے ساتھ رابطہ کاری سے کام کر رہی ہے۔ حالیہ چند ماہ کے دوران امام حسین بریگیڈ اور فورتھ ڈویژن کی قیادت کے درمیان رابطہ کاری اور لڑائی کی مشترکہ کارروائیوں میں نمایاں طور پر اضافہ ہوا ہے۔ فورتھ ڈویژن کے اعلی عسکری افسران مذکورہ ملیشیا کی قیادت کے ساتھ مشرقی غوطہ کے مختلف علاقوں میں اعلانیہ طور پر دکھائی دیتے ہیں۔

گزشتہ ماہ 22 مارچ کو امام حسین بریگیڈز کا سرغنہ اسعد البہادلی غوطہ شرقیہ میں فورتھ ڈویژن کے ایک زمینی کمانڈر کرنل غیاث دلا کے ساتھ نمودار ہوا۔ بریگیڈز کے فیس بک صفحے پر اس موقع کی تصویر اور تفصیل بھی پوسٹ کی گئی تھی۔

بشار کا بھائی ماہر الاسد 1967ء میں پیدا ہوا۔ اس نے دمشق میں میکینیکل انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کی اس کے بعد ماہر نے کیڈٹ اکیڈمی میں داخلہ لے لیا۔ وہاں سے فارغ التحصیل ہونے کے بعد اس کا تقرر فورتھ آرمرڈ ڈویژن میں ہو گیا۔

بشار الاسد کی جانب سے اپنے بھائی ماہر کو سرکاری طور پر فورتھ ڈویژن کا کمانڈر مقرر کرنے کی مختلف وجوہات بیان کی جا رہی ہیں۔ بعض حلقوں کے نزدیک اس کا مقصد فورتھ ڈویژن کے گرتے مورال کو بلند کرنا ہے کیوں کہ غوطہ پر کنٹرول حاصل کرنے کے دوران ڈویژن کو بڑے پیمانے پر نقصانات کا سامنا رہا۔ بعض دیگر حلقوں کے مطابق ماہر کا تقرر اس وجہ سے عمل میں آیا ہے کہ اگر شام کے بحران کے حل کے سلسلے میں بشار الاسد کی اقتدار سے چھٹی ہوئی تو بھی ماہر الاسد کا فوج کے ادارے میں وجود شامی حکومت کے ماحول کے لیے اطمینان کا باعث ہو گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں