فرانس کو دھچکا: ملک میں داعش کی فنڈنگ کرنے والے 416 افراد کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانس میں حکام کو ایسے 416 عطیات کنندگان کے بارے میں معلوم ہوا ہے جو داعش تنظیم کی فنڈنگ میں شریک ہوئے۔ اس بات کا اعلان پیرس میں اٹارنی جنرل فرنسوا مولینس نے کیا۔

انہوں نے "فرانس اِنفو" ریڈیو سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ مالی انٹیلی جنس کے اداروں کے درمیان رابطہ کاری سے حالیہ برسوں میں فرانس میں 416 ایسے افراد کا انکشاف ہوا جو داعش تنظیم کو مالی رقوم فراہم کرتے رہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ مذکورہ اداروں نے 320 ایسے افراد کا بھی پتہ چلایا جنہوں نے بالخصوص ترکی اور لبنان میں رہ کر مالی رقوم جمع کیں، ان کے ذریعے شام میں موجود شدت پسندوں نے مال حاصل کیا۔

مولینس نے "لو پاریزیاں" اخبار کو بتایا کہ داعش نے دو بنیادی طریقوں سے فنڈنگ حاصل کی۔ پہلا طریقہ زکواۃ اور عطیات اور دوسرا طریقہ مال غنیمت یعنی مجرمانہ کارروائیوں کے ذریعے۔

گزشتہ برس ستمبر سے پیرس میں شروع کی جانے والی تحقیقات میں استغاثہ نے پوسٹل بینک کی جانب سے نگرانی کی ذمّے داری انجام نہ دینے کے معاملے کو دیکھا۔

یاد رہے کہ دہشت گردی کی بین الاقوامی فنڈنگ کے حوالے سے فرانس میں دو روزہ (بدھ اور جمعرات) پیرس کانفرنس کا انعقاد کیا گیا۔ کانفرنس میں 72 ممالک کے 500 ماہرین اور 80 وزراء شریک ہوئے تا کہ دہشت گردی کی بین الاقوامی فنڈنگ بالخصوص داعش اور القاعدہ تنظیموں کو مالی رقوم کی فراہمی روکنے کے راستے تلاش کیے جا سکیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں