ایسے حل کے لیے تیار ہیں جس پر اسرائیلی اور فلسطینی راضی ہوں : امریکی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کا کہنا ہے کہ وہ فلسطینی اسرائیلی تنازع کا دو ریاستی حل قبول کرنے کے لیے تیار ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایسے حل تک پہنچا جا سکتا ہے جس پر فریقین راضی ہوں۔

اسرائیل کے دورے کے بعد پیر کے روز عمّان میں اپنے اردنی ہم منصب ایمن الصفدی کے ساتھ ایک پریس کانفرنس میں پومپیو کا کہنا تھا کہ "اسرائیلیوں اور فلسطینیوں پر لازم ہے کہ وہ سیاسی رابطے جاری رکھیں۔ ہم فلسطینیوں پر زور دیتے ہیں کہ وہ سیاسی بات چیت کی طرف واپس لوٹیں"۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ یہ کہہ چکے ہیں کہ اگر فریقین دو ریاستی حل پر متفق ہو گئے تو وہ بھی اس کو سپورٹ کریں گے۔ وہائٹ ہاؤس کی جانب سے اسرائیل اور فلسطینیوں کے لیے ایک نیا امن منصوبہ تیار کیا جا رہا ہے۔

واشنگٹن واپسی سے قبل اردن خطے میں مائیک پومپیو کی آخری منزل ہے۔ دل چسپ بات یہ ہے کہ وزیر خارجہ کا منصب سنبھالنے کے بعد پومپیو ابھی تک وزارت خارجہ میں داخل نہیں ہوئے۔ جمعرات کے روز اپنے عہدے کا حلف اٹھانے کے کچھ دیر بعد پومپیو ایک اجلاس میں شرکت کے لیے برسلز روانہ ہو گئے۔ اس کے بعد انہوں نے مشرق وسطی میں امریکا کے حلیف ممالک کا دورہ کیا۔

شام کے حوالے سے امریکی وزیر خارجہ نے کہا کہ اس حوالے سے امریکا اور اردن کے درمیان مکمل اتفاق ہے جس میں جنوبی شام میں سیف زون برقرار رکھنے کا معاملہ بھی شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ "ہمارے نزدیک امریکا سمیت بہت سے ممالک شام میں جارحیت روکنے اور حتمی سیاسی حل کو یقینی بنانے کے سلسلے میں ایک اہم کردار ادا کریں گے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں