.

لبنان کی نئی پارلیمان میں صنفِ نازک کی نمائندہ صرف 6 خواتین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان میں چھے مئی کو منعقدہ پارلیمانی انتخابات کے نتائج کا اعلان کردیا گیا ہے۔

ان انتخابات نے مختلف سیاسی جماعتوں کے بیشتر سابقہ اراکین ہی کوایک مرتبہ پھر سے پارلیمنٹ میں پہنچا دیا ہے ۔تاہم نشستوں کی مختلف تعداد کے ساتھ ، البتہ "صنفِ نازک" کی نمائندگی میں معمولی ضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

پارلیمنٹ کی 128 نشستوں میں خواتین کے حصّے میں صرف 6 نشستیں آ سکیں۔ ان میں اکثر خواتین سیاسی پس منظر کی حامل ہیں سوائے ایک نئے چہرے کے اور وہ ہیں "بولا یعقوبیان"۔

نئی لبنانی پارلیمنٹ میں نئی منتخب ہونے والی خواتین ارکان کے نام ذیل ہیں :

- ديما جمالی : المستقبل گروپ کی طرابلس شہر سے تعلق رکھنے والی امیدوار بیروت میں امریکی یونی ورسٹی میں بزنس ایڈمنسٹریشن کی پروفیسر ہیں۔ وہ طرابلس کی بلدیہ کے سابق سربراہ انجینئر رشید جمالی کی بیٹی ہیں۔

- رولا الطبش جارودی : بیروت کے حلقے میں سنیوں کی دوسری نشست پر التیار گروپ کے ٹکٹ پر کامیاب ہوئی ہیں۔

- بهيہ الحريری : المستقبل گروپ کی صیدا سے تعلق رکھنے والی خاتون امیدوار سابق وزیر اعظم رفیق حریری کی ہمشیرہ اور موجودہ وزیراعظم سعد حریری کی پھوپھی ہیں۔ سابقہ حکومت میں وزیر تعلیم کے منصب پر کام کر چکی ہیں۔

- ستريدا جعجع : لبنانی فورسز پارٹی کے سربراہ سمیر جعجع کی اہلیہ ہیں۔ سابقہ پارلیمنٹ کی بھی رکن تھیں۔

- عنایہ عزالدين : موجودہ حکومت میں وزیر ہیں اور امل موومنٹ کی امیدوار تھیں ۔اس تحریک کے سربراہ پارلیمنٹ کے اسپیکر نبیہ بری ہیں۔

- بولا یعقوبیان : میڈیا سے تعلق رکھنے والی شخصیت ہیں۔