.

یمنی فوج کا 3 اطراف سے البرح کا محاصرہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں سرکاری فوج نے اتوار کی صبح تعز صوبے کے شمال مغربی علاقے البرح میں اپنی پیش قدمی جاری رکھی۔ اس دوران البرح شہر کے اطراف یمنی فوج اور باغی ملیشیا کے درمیان شدید جھڑپیں دیکھی جا رہی ہیں۔ یمنی فوج کو عرب اتحاد کے اپاچی ہیلی کاپٹروں اور لڑاکا طیاروں کی معاونت حاصل ہے۔ باغی جنگجو البرح شہر کے اطراف بلند ٹیلوں اور مقامات سے فرار ہو گئے۔

زمینی ذرائع کے مطابق یمنی فوج نے اتوار کو صبح صادق کے وقت سے البرح شہر کا تین اطراف سے محاصرہ کر رکھا ہے۔ اس دوران اتحادی طیارے علاقے میں حوثی ملیشیا کے بقیہ ماندہ عناصر پر شدید حملے کر رہے ہیں۔

عسکری ذرائع نے آئندہ چند گھنٹوں میں البرح شہر پر یمنی فوج کے مکمل کنٹرول کی توقع ظاہر کی ہے۔

البرح پر کنٹرول کے ساتھ ہی تعز کی سمت سے مغربی ساحل میں حوثی ملیشیا کا آخری قلعہ بھی زمین بوس ہو جائے گا جو تین برسوں سے باغی ملیشیا کے زیر قبضہ رہا۔ علاوہ ازیں اس کے نتیجے میں یمنی فوج کے سامنے بھی راہ ہموار ہو جائے گی کہ وہ عرب اتحاد کی معاونت سے الحدیدہ اور اس کی تزویراتی بندرگاہ تک رسائی حاصل کر لے۔

البرح شہر مقبنہ ضلعے میں واقع ہے جو رقبے کے لحاظ سے تعز صوبے کا سب سے بڑا ضلع ہے۔ زمینی ذرائع کے مطابق اس کی تطہیر باغی ملیشیا کی گردن کے گرد پھندا سخت کر دے گی۔