امریکی سفارت خانے کی منتقلی سے قبل اسرائیلی فوج کے ہاتھوں 16 فلسطینی جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

غزہ پٹی اور اسرائیل کے درمیان سرحد پر پیر کے روز جھڑپوں کے دوران قابض اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے 16 فلسطینی جاں بحق اور 500 سے زیادہ زخمی ہو گئے۔ یہ پیش رفت بیت المقدس میں امریکی سفارت خانے کے افتتاح سے چند گھنٹے پہلے سامنے آئی ہے۔

فلسطینی طبی ذرائع کے مطابق غزہ پٹی کے مشرق میں سرحد پر اسرائیلی فوج کی وحشیانہ فائرنگ کے نتیجے میں 16 فلسطینی اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے جب کہ 520 افراد زخمی ہوئے۔ فلسطینی خبر رساں ایجنسی "وفا" کے مطابق یہ ہلاکتیں "واپسی کی ریلی" کے سلسلے میں ہونے والی سرگرمیوں کے دوران واقع ہوئی ہیں۔ وفا ایجنسی کے مطابق جاں بحق ہونے والے فلسطینیوں کی عمر 14 سے 30 برس کے درمیان ہے۔

اس سے قبل ہزاروں فلسطینی پیر کو علی الصبح اسرائیل کے ساتھ سرحد کے قریب جمع ہو گئے تھے۔ تقریبا 6 ہفتوں سے جاری احتجاج میں شامل مظاہرین پر اسرائیلی فوج نے آنسو گیس کے شیل داغے۔ عینی شاہدین کے مطابق اسرائیلی لڑاکا طیاروں نے پیر کے روز آگ پکڑنے والا مواد بھی گرایا۔ اس اقدام کا مقصد اُن ٹائروں کو جلا ڈالنا تھا جو احتجاج کرنے والے فلسطینیوں نے اپنے پاس رکھے ہوئے تھے اور ان ٹائروں کو آج بعد میں کسی وقت سرحد کے نزدیک جلایا جانا تھا۔

اس سے قبل قابض اسرائیلی فوج نے پمفلٹس بھی گرائے جن میں غزہ پٹی کی آبادی کو سکیورٹی باڑ کے نزدیک آنے یا اسے خراب کرنے کی کوشش کرنے سے خبردار کیا گیا۔

توقع ہے کہ آج پیر کے روز ہونے والے احتجاج میں شدت آئے گی اس لیے کہ غاصب اسرائیلی ریاست کے قیام کے 70 سال پورنے ہونے پر بیت المقدس میں سرکاری طور پر امریکی سفارت خانے کا افتتاح کیا جا رہا ہے۔

فلسطینیوں کی جانب سے کل 15 مئی بروز منگل "یومِ نکبہ" منانے کے موقع پر احتجاج کا سلسلہ اپنے عروج پر ہو گا۔ آج سے 70 برس قبل 1948ء کو تقریبا 7 لاکھ فلسطینیوں کو ان کے گھروں سے جبری طور پر نکال دینے کے بعد اپنی ہی سرزمین پر پناہ گزین بننے پر مجبور کر دیا گیا۔

فلسطینی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ 30 مارچ کو احتجاجی مظاہروں کے آغاز کے بعد سے اب تک اسرائیلی فوج 60 سے زیادہ فلسطینیوں کو موت کی نیند سلا چکی ہے جب کہ اسرائیلی ہلاکتوں یا زخمیوں کے حوالے سے کوئی رپورٹ نہیں ہے۔

فلسطینی ہلاکتوں کی تعداد پر بین الاقوامی سطح پر تنقید سامنے آئی جب کہ اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ وہ سرحد کا دفاع کر رہی ہے اور جھڑپوں کے اصول و ضوابط کے تحت ہی فائرنگ کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں