برطانوی شاہی خاندان کی مجموعی دولت 88 ارب ڈالر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

برطانیہ میں تمام تر نظریں شاہی خاندان پر مرکوز ہیں جہاں آئندہ ہفتے کے روز شہزادہ ہیری کی شادی کی تقریب منعقد ہو رہی ہے۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ برطانوی شاہی خاندان اپنی شادیوں کی تقریبات کے بھاری اخراجات برداشت کرنے کی پوری استطاعت رکھتا ہے۔

امریکی جریدےForbes کے مطابق برطانوی شاہی خاندان کی مجموعی دولت 88 ارب ڈالر کے قریب ہے۔ ملکہ الزبتھ 53 کروڑ ڈالر کے ذاتی اثاثوں کے ساتھ خاندان کی امیر ترین شخصیت ہیں۔ تاہم ملکہ کے پاس یہ رقم آتی کہاں سے ہے ؟

ملکہ کی ذاتی دولت میں ان کی سرمایہ کاری کے اثاثے شامل ہیں جو ملکہ کے زیورات اور جائیدادوں پر مشتمل ہے۔ یہ جائیداد ملکہ کو اُن کے والد کی جانب سے وراثت میں ملی۔ ان میں اسکاٹ لینڈ میںBalmoral Castle اور برطانیہ میں Sandringham House ہے۔ ان دو جائیدادوں کی مجموعی قیمت کا اندازہ 17.5 کروڑ ڈالر لگایا گیا ہے۔

علاوہ ازیں گھوڑوں کی دوڑ میں ملکہ الزبتھ کی شرکت بھی ان کے لیے منافع بخش ثابت ہوئی ہے۔ آخری تین دہائیوں کے دوران ان مقابلوں کے ذریعے ملکہ کو 90 لاکھ ڈالر کی آمدن ہوئی۔

ملکہ برطانیہ کی آمدن کا ایک دوسرا ذریعہ حکومت کی جانب سے ملکہ کے اخراجات کے واسطے مختص کی گئی رقم ہے۔ اس رقم کے ذریعے ملکہ کے سرکاری اخراجات مثلا سفر ، استقبالیے اور بکنگھم پیلس کی دیکھ بھال اور مرمت کی کام انجام دیے جاتے ہیں۔ گزشتہ برس اس مد میں ہونے والے اخراجات کا حجم 10 کروڑ ڈالر رہا۔

ملکہ الزبتھ کو Duke of Lancaster ہونے کی حیثیت سے سالانہ 2.5 کروڑ ڈالر کے قریب تنخواہ بھی ملتی ہے۔

ملکہ الزبتھ کے بیٹے شہزادہ چارلس کی مجموعی دولت کا حجم 40 کروڑ ڈالر کے قریب ہے۔

جہاں تک شاہی خاندان کی نئی نسل کا تعلق ہے تو شہزادہ ولیم کی دولت کا حجم 3 کروڑ ڈالر، ان کی اہلیہ کیٹ میڈلٹن کی دولت کا حجم 70 لاکھ ڈالر اور شہزادہ ہیری کی دولت کا حجم 2.5 کروڑ ڈالر ہے۔

توقع ہے کہ شہزادہ ہیری کی بیگمMeghan Markle آئندہ ہفتے کے روز رشتہ ازدواج میں منسلک ہو کر شاہی خاندان کی مجموعی دولت میں 50 لاکھ ڈالر کے اضافے کا ذریعہ بن جائیں گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں