سفارت خانے کی القدس منتقلی، فلسطینی ایلچی کو امریکا سے واپس بلا لیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فلسطینی اتھارٹی کے سینیر مذاکرات کار صائب عریقات نے کہا ہے کہ صدر محمود عباس نے منگل کے روز امریکا میں متعین فلسطینی مندوب کو واپس بلا لیا ہے۔

فلسطین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی’وفا‘ کے مطابق صائب عریقات کا کہنا ہے کہ امریکا میں متعین تنظیم آزادی فلسطین کے مندوب حسام زملط کو امریکا کی طرف سے تل ابیب سے اپنا سفارت خانہ القدس منتقل کرنے کے بعد واپس بلایا گیا ہے۔

خیال رہے کہ 14 مئی کو امریکا نے مقبوضہ بیت المقدس میں اپنے سفارت خانے کا افتتاح کیا ہے۔ سفارت خانے کی افتتاحی تقریب میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے داماد جیرڈ کوشنر اور بیٹی ایوانکا ٹرمپ نے شرکت کی تھی۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گذشتہ برس دسمبر میں بیت المقدس کو اسرائیل کا غیر منقسم دارالحکومت تسلیم کرتے ہوئے جلد ہی سفارت خانے کی القدس منتقلی کا اعلان کیا تھا۔

ادھر فلسطینی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں امریکا کو دوبارہ شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے اور سفارت خانے کی القدس منتقلی کے بعد امریکا غیر جانب دار مصالحت کار کا کردار کھو چکا ہے۔ اب امریکا پر مشرق وسطیٰ میں امن مساعی کی نگرانی کا اعتبار نہیں کیا جاسکتا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں