غزہ میں تشدد، کویت کا سلامتی کونسل میں نئی قرارداد پیش کرنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی کی مشرقی سرحد پر فلسطینی شہریوں کے پرامن مظاہروں کو طاقت سے کچلنے کی اسرائیلی حکمت عملی کے خلاف عرب ممالک حرکت میں آ گئے ہیں۔ خلیجی ریاست کویت نے غزہ میں شہریوں کے تحفظ کے لیے سلامتی کونسل میں ایک نئی قرارداد پیش کرنے کا اعلان کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق منگل کے روز نیویارک میں ہونے والے سلامتی کونسل کے اجلاس میں غزہ میں سنہ 2014ء کی جنگ میں سب سے زیادہ ہلاکتوں پر تشویش کا اظہار کیا گیا۔

فلسطینی وزارت صحت کے مطابق غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کے وحشیانہ حملوں میں سوموار کی شام تک 60 فلسطینی مظاہرین شہید اور ہزاروں کی تعداد میں زخمی ہو چکے ہیں۔ اسرائیلی راج کی طرف سے نہتے فلسطینیوں کے خلاف زہریلی آنسوگیس کی شیلنگ، براہ راست فائرنگ اور دھاتی گولیوں کا بے دریغ استعمال کیا جا رہا ہے۔

اقوام متحدہ میں کویت کے سفیر منصور العتیبی نے اجلاس کےبعد صحافیوں کو بتایا کہ توقع ہے کہ آج بدھ کے روز وہ سلامتی کونسل کے ارکان میں غزہ میں تشدد روکنے کے لیے نئی قرارداد کا متن پیش کریں گے۔ تاہم یہ واضح نہیں ہو سکا کہ آیا نئی قرارداد پر آج ہی رائے شماری ہوگی یا نہیں۔

انہوں نے کہا کہ جنیوا معاہدے کے سفارشات کو تسلیم کرنے پر اسرائیل فلسطینی شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے کا پابند ہے مگر صہیونی ریاست کی طرف سے اس معاہدے کی خلاف ورزی کی جا رہی ہے۔ وہ سلامتی کونسل میں قرارداد اس لیے پیش کر رہے ہیں تاکہ کونسل اسرائیل کو بین الاقوامی معاہدوں کا پابند بنائے۔

سفارت کاروں کا کہنا ہے کہ غالب امکان یہ ہے کہ امریکا کویت کی قرارداد کو ویٹو کر دے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں