لیبیا کی فوج کا درنہ شہر کے کئی ٹھکانوں پر کنٹرول ، 21 دہشت گرد گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا میں سرکاری فوج کے میڈیا کوآرڈی نیٹر عبدالکریم صبرہ نے بتایا ہے کہ لیبیا کی فوج کے یونٹس منگل کی دوپہر سے درنہ شہر کی جانب پانچ اطراف سے پیش قدمی کر رہے ہیں۔

صبرہ نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ فوج نے درنہ کے جنوب میں واقع علاقے الحیلہ پر مکمل کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔ ادھر لیبیا کی فوج نے ایک بیان مین درنہ کی مقامی آبادی کو خبردار کیا ہے کہ وہ دہشت گرد گروپوں کے نشانچیوں سے دوُر رہیں جو شہر میں گھروں کی چھتوں کو استعمال کر رہے ہیں۔

بیان کے مطابق فوج نے لڑائی کے دوران شہر کے اطراف دہشت گرد گروپوں کے مورچہ بند ٹھکانوں پر کنٹرول حاصل کر لیا۔

پیر کے روز لیبیا کی فوج اور دہشت گرد جماعتوں پر مشتمل گروپ "مجلس شورى درنہ" کے جنگجوؤں کے درمیان بھاری ہتھیاروں کے ساتھ مختلف علاقوں میں شدید جھڑپیں ہوئیں۔ اس گروپ نے 2012ء سے درنہ شہر پر قبضہ کیا ہوا ہے۔

دوسری جانب لیبیا کی فوج کے حربی ذرائع ابلاغ کے شعبے نے 21 دہشت گردوں کو گرفتار کیا ہے جن میں 6 افراد مختلف غیر ملکی شہریتوں کے حامل ہیں۔ شعبے کے مطابق لڑائی کا سلسلہ ابھی جاری ہے۔

لیبیا کی فوج کے سربراہ خلیفہ حفتر نے رواں ماہ کی سات تاریخ کو درنہ شہر کو "مجلس شوری درنہ" گروپ کے قبضے سے آزاد کرانے کے لیے فوجی آپریشن شروع کرنے کا اعلان کیا تھا۔ مذکورہ گروپ نے خود کو تحلیل کر کے "درنہ پروٹیکشن فورس" کا نام دے دیا تھا۔ گروپ یہ گمراہ کن دعوی بھی کرتا ہے کہ لیبیا کے عوام اس کی صفوں میں شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں