.

بغداد: مجلس عزاء میں خود کش دھماکے کے نتیجے میں 8 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے ذرائع ابلاغ نے خبر دی ہے کہ بغداد کے نواحی علاقے الطارمیہ میں ایک مجلس عزاء میں ہونے والے خود کش حملے کے نتیجے میں کم سے کم آٹھ افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

یہ واقعہ شمالی بغداد میں بدھ کے روز اس وقت پیش آیا جب شیعہ زائرین کی بڑی تعداد ایک مجلس عزاء میں شریک تھی کہ اس دوران ایک خود کش بم بار نے ان میں گھس کر خود کو دھماکے سے اڑایا۔ دھماکے کی آواز دور دور تک سنی گئی۔ دھماکے میں کم سے کم آٹھ افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے۔

آخری اطلاعات تک کسی گروپ کی طرف سے اس حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ الطارمیہ میں دہشت گردی کے واقعے کے باوجود حالات قابو میں ہیں۔ بغداد آپریشنل کمانڈ کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں کے ایک گروپ نے مجلس عزا میں داخل ہو کر دہشت گردی کی کوشش کی تھی تاہم ان میں سے صرف ایک مجلس میں پہنچ پایا دیگر دہشت گردوں کو کارروائی میں ہلاک کردیا گیا ہے۔

سیکیورٹی چیف جنرل جلیل الربیعی نے بتایا کہ الطارمیہ میں دہشت گردوں کے گھسنے کے باوجود حالات قابو میں اور پرامن ہیں۔ انہوں نے گذشتہ روز مجلس عزاء میں ہونے والے حملے کو داعش کی انتقامی کارروائی قرار دیا۔

قبل ازیں بغداد کے ایک سیکیورٹی ذریعے نے بتایا تھا کہ منگل کے روز داعش کےایک گروپ نے شمالی بغداد میں الطارمیہ کے مقام پر 14 رمضان نامی علاقے میں اندھا دھند فائرنگ کرکے 16 شہریوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا۔