.

سعودی خاتون نے غیر متوقع انداز سے اپنے باپ کو "خوش" کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسکالر شپ پر بیرون ملک زیر تعلیم ایک سعودی خاتون نے ٹوئیٹر پر اپنے فالورز سے اپیل کی ہے کہ وہ "حرمِ مدنی کے نزدیک اس کے والد کے ٹھیلے سے مسواک خریدیں"۔ خاتون نے مذکورہ ٹھیلے کے ساتھ اپنے والد کی تصویر بھی منسلک کی ہے۔

تصویر پر تبصرہ کرے ہوئے مذکورہ خاتون امجاد محمد علی نے لکھا ہے کہ "میں خود ہر چیز میں اپنے والد کی مدد کرتی ہوں لیکن میرے ہاتھ میں کچھ نہیں۔ میرے والد مدینہ منورہ میں مسجد نبوی کے نزدیک مسواک کا ٹھیلہ لگاتے ہیں۔ جو کوئی وہاں جائے اور انہیں دیکھے تو ان سے ایک مسواک ضرور خریدے"۔ امجاد کے والد اضافی آمدنی کے واسطے یہ کام کرتے ہیں۔

امجاد کو توقع نہیں تھی کہ سوشل میڈیا پر ان کی اپیل کے پھیل جانے کے بعد سماجی سطح پر عوام کا اتنا مثبت ردّ مل سامنے آئے گا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے امجاد نے بتایا کہ لوگوں نے وسیع اور بڑے پیمانے پر ان کا مثبت جواب دیا اور وہ بھلائی سے بھرپور اس معاشرے کے برتاؤ پر حیران رہ گئیں۔

امجاد کینیڈا میں اپنے شوہر کے ساتھ اسکالر شپ پر زیر تعلیم ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ "ٹوئیٹر پر ان کے فالوورز کی تعداد بہت زیادہ نہیں اس لیے انہیں توقع نہیں تھی کہ کوئی ان کی ٹوئیٹ پر کان دھرے گا یہ ان کی اپیل اتنے بڑے پیمانے پر پھیل جائے گی۔ ابو علی کی کنیت سے معروف ان کے والد لوگوں کی آمد پر بہت خوش ہیں۔ بہت سے لوگ خاص طور پر میرے والد سے مسواک خریدنے کے لیے گئے"۔

امجاد کے مطابق ان کے والد ایک ریٹائرڈ فوجی اہل کار ہیں اور ان کی مالی حالت درمیانے درجے کی ہے۔ اہوں نے 6 ماہ سے مسواک کا ٹھیلہ لگایا ہوا ہے تا کہ اپنے ایک نجی منصوبے پر کام کر سکیں۔

سوشل میڈیا پر سرگرم حلقوں کی جانب سے امجاد کے ٹوئیٹ کو بھرپور انداز سے سراہا گیا ہے۔ لوگوں نے امجاد کے جذبے کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے اس کے والد کی روزی میں فراخی کے حوالے سے نیک تمناؤں کا اظہار کیا ہے۔