.

یمن : حوثی ملیشیا ڈھیر ہو کر مغربی ساحل کے محاذ سے فرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کی فوج کی جانب سے ہفتے کے روز جاری تصاویر میں باغی حوثی ملیشیا کو ڈھیر ہوتے اور مغربی ساحل کے محاذ پر مختلف علاقوں سے فرار ہوتے دیکھا جا سکتا ہے۔ یہ صورت حال زمینی طور پر عرب اتحاد کی معاونت سے سرکاری فوج کی مسلسل پیش قدمی اور اس کے الحدیدہ کے کناروں تک پہنچ جانے کے بعد سامنے آئی ہے۔

تصاویر میں الحدیدہ کے جنوب میں کئی علاقوں میں حوثیوں کے فرار کے بعد ان کی خندقوں کو دکھایا گیا ہے۔ یمنی حکومت کے ریپبلکن گارڈز اور عوامی مزاحمت کاروں نے باغیوں کو پیس ڈالنے والی کاری ضربوں اور کامیابیوں کو یقینی بنایا ہے۔

زمینی ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ ہلاکت اور قید سے بچ جانے والے حوثی ارکان اپنے ہتھیاروں اور گولہ بارود کو چھوڑ کر فرار ہو گئے۔

یمنی فوج ہفتے کے روز الحدیدہ کے مغرب میں بیت الفقیہ ضلعے میں پہلے دو علاقوں پر کنٹرول حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئی۔

مقامی آبادی کے مطابق حوثی ملیشیا آئینی حکومت کی فورسز کے پہنچنے سے قبل ہی مغربی ساحل کے محاذ کے علاقوں سے بھاگ نکلی۔ ان کے مطابق باغی ملیشیا کو وسیع پیمانے پر سقوط کا سامنا ہے اور اس کے درجنوں ارکان اپنا اسلحہ اور گولہ بارود چھوڑ کر زبید اور الجراحی کی سمت فرار ہو گئے۔

عسکری ماہرین کے مطابق الحدیدہ اور اس کی تزویراتی بندرگاہ کی واپسی اور آزادی یہ ایران نواز حوثی بغاوت کے تابوت میں آخری کیل ثابت ہو گی۔ اس طرح ملیشیا کے قبضے میں موجود آخری سمندر شہ رگ بھی چھین لی جائے گی تا کہ ملیشیا تک ایرانی ہتھیاروں کی رسائی کو روکا جا سکے اور بحر احمر اور آبنائے باب المندب میں بین الاقوامی جہاز رانی کو مکمل طور پر محفوظ بنایا جا سکے۔