.

ایران خطے میں مزاحمتی قوتوں کی پشت پناہی جاری رکھے گا: علی خامنہ ای

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے کہا ہے کہ ان کا ملک مشرقِ اوسط کے خطے میں اپنے اثر ورسوخ کے خاتمے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتا ہے ۔ انھوں نے عرب نوجوانوں پر زور دیا ہے کہ وہ امریکا کے دباؤ کے مقابلے کے لیے اٹھ کھڑے ہوں۔

خامنہ ای نے سرکاری ٹیلی ویژن سے نشر کی گئی تقریر میں کہا :’’ عرب نوجوانو! تمھیں اپنا مستقبل اپنے ہاتھ میں لینے کے لیے اقدامات کرنا ہوں گے۔ بعض علاقائی ممالک اپنے ہی عوام کے خلاف دشمن کا کردار ادا کررہے ہیں۔ ہم خطے میں مقہور اقوام اور مزاحمتی قوتوں کی پشت پناہی جاری رکھیں گے‘‘۔

انھوں نے خبردار کیا کہ اگر دشمن نے ایران پر حملہ کیا تو اس کا سخت جواب دیا جائے گا ۔انھوں نے واضح کیا کہ ملک کا بیلسٹک میزائلوں کا پروگرام دفاعی مقاصد کے لیے ہے۔

خامنہ ای نے اپنی تقریر میں مزید کہا:’’ اگر دشمنوں نے حملہ کیا تو ایران 10 گنا بڑا جوابی حملہ کرے گا ۔دشمن خطے میں ایک آزاد ایران کو دیکھنا نہیں چاہتے ہیں۔ہم جبر و استبداد کا شکار اقوام کی حمایت جاری رکھیں گے۔ہمارے دشمنوں نے ہمارے خلاف ایک معاشی اور نفسیاتی جنگ مسلط کی ہے۔امریکا کی نئی پابندیاں بھی اس جنگ کا حصہ ہیں‘‘۔