.

غزہ پٹی کی سرحد پر فلسطینی شہری اسرائیلی فائرنگ کا نشانہ بن گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قابض اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ اس کے اہل کاروں نے پیر کے روز ایک فلسطینی کو فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا جو غزہ پٹی سے سرحد کو عبور کرنے کی کوشش کر رہا تھا اور اس کے پاس ایک کلہاڑی بھی تھی۔

اسرائیلی فوج نے چند تصاویر بھی جاری کی ہیں اور کہا ہے کہ یہ سرحد کے نزدیک زمین پر پڑی ہوئی کلہاڑی کی ہیں۔ اسرائیلی فوج کے ترجمان کے مطابق مقتول فلسطینی کے ساتھ ایک اور فلسطینی بھی تھا جو بعد ازاں فرار ہو گیا۔

فلسطینی ذمّے داران کی جانب سے واقعے پر کوئی تبصرہ سامنے نہیں آیا ہے۔

یاد رہے کہ فلسطینی تنظیموں حماس اور اسلامی جہاد نے گزشتہ ہفتے اسرائیل پر درجنوں راکٹ اور مارٹر گولے داغے تھے۔ اسرائیل نے ٹینکوں کی فائرنگ اور فضائی حملوں کے ذریعے جوابی کارروائی کی۔

رواں برس 30 مارچ سے غزہ پٹی اور اسرائیل کے درمیان سرحد پر ہونے والے احتجاج کے دوران اسرائیلی فوج اب تک کم از کم 120 فلسطینیوں کو موت کی نیند سُلا چکی ہے۔

فلسطینیوں کا کہنا ہے کہ جاں بحق ہونے والے زیادہ تر افراد اور ہزاروں زخمی نہتے شہری تھے جن کے خلاف اسرائیل نے طاقت کا حد سے زیادہ استعمال کیا۔

اسرائیلی فوج نے 2005ء سے غزہ پٹی کا محاصرہ کر رکھا ہے۔