عراقی وزیراعظم حیدر العبادی کا پارلیمانی انتخابات میں ’’خطرناک خلاف ورزیوں ‘‘پر انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عراق کے وزیراعظم حیدر العبادی نے کہا ہے کہ 12 مئی کو منعقدہ پارلیمانی انتخابات میں ’’خطرناک خلاف ورزیاں‘‘ ہوئی تھیں۔

حیدر العبادی نے منگل کے روز بغداد میں ایک نیوز کانفرنس میں کہا کہ حکومت کو پیش کی گئی ایک رپورٹ میں عام انتخابات میں ڈالے گئے ووٹوں کی دوبارہ ہاتھوں سے جزوی گنتی کی سفارش کی گئی ہے۔انھوں نے خبردار کیا ہے کہ عراق کے الیکٹورل کمیشن کے بعض ارکان پر ان کی اجازت کے بغیر بیرون ملک جانے پر پابندی ہوگی۔

12 مئی کو منعقدہ پارلیمانی انتخابات کے نتائج کے مطابق شیعہ لیڈر مقتدیٰ الصدر کی قیادت میں سائرون اتحاد نے 54 نشستیں حاصل کی ہیں۔فتح اتحاد کے حصے میں 47 نشستیں آئی ہیں ۔اس اتحاد میں ایران نواز شیعہ ملیشیاؤں پر مشتمل الحشد الشعبی کے یونٹس شامل ہیں۔ وزیراعظم حیدر العبادی کی قیادت میں نصر اتحاد نے 42 نشستوں پر کامیابی حاصل کی ہے۔

سابق وزیراعظم نوری المالکی کی قیادت میں اسٹیٹ آف لا اتحاد نے 26 اور مسعود بارزانی کی قیادت میں کردستان جمہوری پارٹی نے 25نشستیں جیتی ہیں۔سابق وزیراعظم ایادعلاوی کی قیادت میں اتحاد نے 21 نشستوں پر کامیابی حاصل کی ہے۔ شیعہ رہ نما عمار الحکیم کے اتحاد کے حصے میں 19 نشستیں آئی ہیں ۔

عراق کے مرحوم صدر جلال طالبانی کی کرد جماعت کے امیدوار 18 نشستوں پر کامیاب ہوئے ہیں۔ پارلیمان کے سابق اسپیکر اسامہ النجیفی کی قیادت میں اتحاد نے 14 نشستیں حاصل کی ہیں۔مقتدیٰ الصدر اور ا ن کی قیادت میں سائرون اتحاد نے دوسرے اتحادوں کے ساتھ مل کر ٹیکنو کریٹس پر مشتمل کابینہ بنا نے کے ارادے کا اظہار کیا ہے لیکن ابھی تک مخلوط حکومت کی تشکیل کے لیے کوئی نمایاں پیش رفت نہیں ہوئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں