الحدیدہ : عوامی مزاحمتی گروپوں کی تشکیل سے حوثیوں میں ہلچل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے مغربی شہر الحدیدہ میں مقامی ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ یمنی مشترکہ فورسز کے الحدیدہ کے نزدیک آنے کے ساتھ ہی شہر کے اندر عوام نے حوثیوں کے خلاف مزاحمتی گروپ تشکیل دینا شروع کر دیے ہیں۔ اس پیش رفت نے باغیوں کو خوف اور دہشت میں مبتلا کر دیا ہے۔ اس بوکھلاہٹ میں حوثیوں نے اندھا دھند گرفتاریوں کی مہم کا سہارا لیا ہے اور شہریوں کے گھروں کی چھتوں پر اپنے نشانچی تعینات کر دہیے ہیں۔

مذکورہ ذرائع نے باور کرایا ہے کہ الحدیدہ شہر کے نوجوان حوثیوں کے خلاف مزاحمتی گروپ تشکیل دینے اور سرکاری اور نجی املاک کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے کوشاں ہیں۔

دوسری جانب حوثی ملیشیا نے الحدیدہ کے باسیوں کے خلاف گرفتاریاں تیز کر دی ہیں۔

مقامی آبادی کے مطابق حوثیوں کے خلاف عوامی غیض و غضب اپنے عروج پر ہے۔ اس کی وجہ باغیوں کی جانب سے شہریوں کے خلاف مرتکب جرائم اور انسانی حقوق کی پامالیاں ہیں۔ ان کارستانیوں کے نتیجے میں شہر میں درآمدات کا سلسلہ بند ہو گیا اور شہریوں کو غربت اور قحط کا سامنا ہے۔

اس سے قبل الحدیدہ صوبے کے گورنر الحسن طاہر نے بتایا تھا کہ شہر کے اندر مختلف عوامی گروپس آئینی حکومت کی مختلف طریقوں سے مدد کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ مشترکہ یمنی فورسز عرب اتحاد کی معاونت سے الحدیدہ شہر کے مضافات میں حتمی معرکے کی تیاری میں ہیں تا کہ حوثی ملیشیا کو ہتھیاروں کی اسمگلنگ کی آخری شہ رگ بھی کاٹ دی جائے اور باغیوں کے انقلاب کے اختتام کا آغاز ہو جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں