مکہ اور مدینہ کے درمیان حرمین ٹرین کے 4 اسفار مکمل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں حرمین ٹرین کی انتظامیہ نے اعلان کیا ہے کہ اس نے مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کے درمیان چار اسفار میں 800 سے زیادہ مسافروں کی میزبانی کی۔

سعودی سرکاری نیوز ایجنسی SPA کے مطابق مملکت میں جنرل ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے سربراہ ڈاکٹر رمیح بن محمد الرمیح کے مطابق حرمین ٹرین کو شہریوں اور دونوں مقدس شہروں کا رخ کرنے والے معتمرین کی جانب سے بڑی توجہ اور پذیرائی حاصل ہوئی جو منصوبے کے لیے کام کرنے والے تمام افراد کے واسطے ایک اعزاز کی بات ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس وقت دونوں شہروں کے درمیان تجرباتی سفر کا دورانیہ 2:30 گھںٹے ہے جس کے دوران بعض اسٹیشنوں پر رکا جاتا ہے۔ البتہ براہ راست سفر 2 گھنٹے کا ہو گا۔

انہوں نے واضح کیا کہ ہر ہفتے کے اختتام پر شہریوں کے لیے مخصوص پہلا مفت سفر یکم جون 2018ء کو مدینہ منورہ سے مکہ مکرمہ تک مکمل ہوا۔ یہ سلسلہ ستمبر میں کمرشل آپریشن شروع ہونے تک جاری رہے گا۔

ڈاکٹر الرمیح نے حرمین ٹرین کے منصوبے کو کامیاب بنانے کے لیے اہم کردار ادا کرنے پر خادم حرمین شریفین اور ان کے ولی عہد کا شکریہ ادا کیا اور انہیں خراج تحسین پیش کیا۔

دوسری جانب منصوبے کے ڈائریکٹر جنرل انجینئر محمد فدا نے واضح کیا کہ حرمین ٹرین میں سفر کے تجربے سے لطف اندوز ہونے کے خواہش مند افراد کا ایک جمِ غفیر ہے۔

ان کے مطابق منصوبے کی برقی ٹرین کی رفتار 300 کلومیٹر فی گھنٹہ ہے۔ تقریبا 450 کلو میٹر طویل سفر پانچ اسٹیشنوں پر مشتمل ہے۔ ان میں مکہ مکرمہ ، مدینہ منورہ ، رابغ میں کنگ عبداللہ اکنامک سِٹی ، جدہ انٹرنیشنل ایئرپورٹ اور جدہ شہر شامل ہیں۔ حرمین ٹرین کے منصوبے میں ٹرینوں کی تعداد 35 ہے۔ ہر ٹرین 13 بوگیوں پر مشتمل ہے اور ٹرین میں ایک وقت میں 417 افراد کے سفر کی گنجائش ہے۔ منصوبے کے ذریعے سالانہ 6 کروڑ افراد سفر کر سکیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں