.

اقوام متحدہ : غزہ کے حوالے سے جنرل اسمبلی کا ہنگامی اجلاس بدھ کو ہو گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ میں عرب ممالک کی درخواست پر غزہ کے حوالے سے جنرل اسمبلی کا ہنگامی اجلاس بدھ کے روز ہو گا۔ اس بات کا اعلان جنرل اسمبلی کے اسپیکر میروسلاف لاجیک نے 193 رکن ممالک کو بھیجے گئے خط میں کیا۔

دوسری جانب اقوام متحدہ میں فلسطین کے مستقل نمائندے ریاض منصور کے مطابق جنرل اسمبلی کے ہنگامی اجلاس میں مقبوضہ اراضی میں فلسطینیوں کے لیے بین الاقوامی تحفظ فراہم کرنے کا موضوع زیر بحث آئے گا۔ فلسطینی نمائندے نے یہ بات اقوام متحدہ کے صدر دفتر سے جاری ایک اخباری بیان میں بتائی۔

اقوام متحدہ میں سفارتی ذرائع نے توقع ظاہر کی ہے کہ اس اجلاس میں اسرائیل کی مذمت کے سلسلے میں ایک قرار داد پر رائے شماری بھی ہو گی۔ ایک ہفتہ قبل سلامتی کونسل میں کویت کی جانب سے پیش کی گئی اسی نوعیت کی ایک قرار داد کو امریکا نے ویٹو کر دیا تھا۔

ابھی تک بین الاقوامی تحفظ کی وہ صورت واضح نہیں ہو سکی ہے جس کا مطالبہ غزہ پٹی میں فلسطینیوں کی جانب سے کیا جا رہا ہے۔ آیا یہ امر مبصرین سے متعلق ہے یا پھر امن فوج کی تعیناتی کے حوالے سے۔ حالیہ عرصے میں عرب ممالک نے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل آنتونیو گوتیریس سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس حوالے سے تجاویز پیش کریں۔ ایک سفارت کار کے مطابق گوتیریس کا کہنا ہے کہ اس مسئلے پر غور کے لیے انہیں سلامتی کونسل کی جانب سے اختیار سونپے جانے کی ضرورت ہے۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کو (3 نومبر 1950ء کو منظور کی جانے والی قرار داد کے مطابق) اس امر کی اجازت ہے کہ وہ اُس صورت میں ایک "غیر معمولی ہنگامی اجلاس" منعقد کر سکتی ہے جب کہ امن کو خطرہ ہو ، امن کی خلاف ورزی کی گئی ہو ، جارحیت کی کوئی کارروائی سامنے آئی ہو اور سلامتی کونسل کسی مستقل رکن کے ویٹو کے سبب اس معاملے پر کسی اقدام سے قاصر ہو۔ ایسی صورت میں جنرل اسمبلی فوری طور پر معاملے کو زیر غور لا کر ارکان کو سفارشات جاری کر سکتی ہے تا کہ وہ اجتماعی اقدامات لے سکیں۔

فلسطینی نمائندے ریاض منصور نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ "ہم کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے اور فلسطینیوں کے لیے بین الاقوامی تحفظ کے مطالبے سے ہر گز پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ ہمیں امید ہے کہ اس سلسلے میں عملی تجاویز تک پہنچنے کے لیے عالمی برادری مثبت جواب دے گی"۔

یاد رہے کہ فلسطینی وزارت صحت نے جمعے کے روز اعلان کیا تھا کہ غزہ پٹی اور اسرائیل کے مشرق میں واقع سکیورٹی باڑ کے نزدیک اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے ایک بچّے سمیت چار فلسطینی شہید ہو گئے جب کہ 618 زخمی بھی ہوئے۔ یہ تمام افراد غزہ پٹی کی مشرقی سرحد پر احتجاجی ریلی میں شریک تھے۔