یمن میں آپریشن کا مقصد دوسری حزب اللہ کو سر اٹھانے سے روکنا ہے:اماراتی سفیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

برطانیہ میں متعین متحدہ عرب امارات کےسفیر سلیمان المزروعی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یمن میں عرب اتحادی فوج کےآپریشن کا مقصد خطے میں ایک اور حزب اللہ کو سراٹھانے سے روکنا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اپنے ایک بیان میں امارتی سفیر کا کہنا تھا کہ عرب اتحاد کو یمن میں اس لیے مداخلت کرنا پڑی کہ ایران وہاں ایک اور حزب اللہ کو پیدا کرنے کی کوشش کررہا تھا۔ حوثی باغی یمن کی حزب اللہ ہیں جنہوں نے ایران کے ساتھ مل کر جزیرۃ العرب کو یرغمال بنانے کی سازش کی تاہم عرب اتحاد نے بروقت کارروائی کرکے دشمن کی سازش ناکام بنا دی۔

المزروعی نے کہا کہ عرب ممالک نہ صرف یمن میں باغیوں کے خلاف جنگ میں مصروف ہیں بلکہ ان کی جانب سے الحدیدہ اور دوسرے محاصرہ زدہ علاقوں میں بھرپور امدادی آپریشنز بھی جاری ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ حوثیوں کی جانب سے الحدیدہ بندرگاہ کو تباہ کیے جانے کے بعد سمندر کے راستے امدادی سامان کی ترسیل رک گئی ہے تاہم فضائی اور بری راستوں سے امدادی کارروائیاں جاری ہیں۔

خیال رہے کہ یمن کی سرکاری فوج اور اس کی حامی عرب اتحادی فوج اس وقت الحدیدہ شہر اور بندرگاہ کے کںٹرول کے حصول کے لیے بھرپور فوجی کارروائی جاری رکھے ہوئے ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں