.

کسی سیاست دان کو عراق کے انتخابی نتائج کالعدم قرار دینے کا حق نہیں : الصدری گروپ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں الصدری گروپ کے سربراہ مقتدی الصدر کے ترجمان جعفر موسوی کا کہنا ہے کہ کسی سیاسی شخصیت کو یہ حق حاصل نہیں کہ وہ وفاقی عدالت کا فیصلہ جاری ہونے سے قبل انتخابی نتائج کو کالعدم قرار دے۔

موسوی نے منگل کے روز کہا کہ پارلیمنٹ کا غیر معمولی کھلا اجلاس ایک "سیاسی بدعت" ہے۔ انہوں نے بتایا کہ وفاقی عدالت پہلے ہی باور کرا چکی ہے کہ اس اجلاس کے فیصلے "کالعدم" ہیں۔

وفاقی عدالت نے جمعرات 21 جون کا دن عراقی صدر فؤاد معصوم اور خصوصی بورڈ آف کمشنرز کے اعتراضات کا جائزہ لینے کے لیے مقرر کیا ہے۔ یہ بورڈ انتخابی قانون کی تیسری ترمیم کا تقاضہ کرنے والے پارلیمنٹ کے فیصلے سے متعلق ہے۔

اس سے قبل عراقی وزیراعظم حیدر العبادی یہ اعلان کر چکے ہیں کہ وفاقی عدالت وہ واحد ادارہ ہے جو انتخابی نتائج کے حوالے سے سیاسی گروپوں کے درمیان اختلافی امور کا فیصلہ کرنے کا مجاز ہے، ان امور میں انتخابات کا دوبارہ کرایا جانا بھی شامل ہے۔