.

یمنی فوج کا الحدیدہ کے جنوبی علاقے "الربيصہ" پر دھاوا ، نظریں بندرگاہ پر مرکوز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمنی فوج نے منگل کے روز الحدید کے ہوائی اڈے پر کنٹرول حاصل کرنے کے بعد شہر کے جنوبی علاقے الربیصہ پر حملہ کر دیا۔

یمنی فوج کے عکسری کمانڈر کا کہنا ہے کہ ان کی فورسز الحدیدہ کی بندرگاہ والی سڑک کی جانب پیش قدمی کے لیے کوشاں ہیں تا کہ بندرگاہ کو بھی کنٹرول میں لیا جا سکے۔ انہوں نے باور کرایا کہ یمنی فوج اور حوثی ملیشیا کے درمیان شدید لڑائی ہو رہی ہے۔

یمنی فوج نے الحدیدہ صنعاء ہائی وے پر بھی کنٹرول حاصل کر لیا ہے جس کے بعد باغی ملیشیا کی امدادی لائن منقطع ہو گئی۔

دوسری جانب باغی حوثی ملیشیا نے منگل کی شب الحدیدہ شہر کے بعض علاقوں میں ہنگامی حالت نافذ کر دی۔ اس دوران اس کے مسلح ارکان کی بڑی تعداد رہائشی علاقوں میں پھیل گئی۔ مقامی آبادی کے مطابق اس سے قبل یمنی فوج نے اتحادی فورسز کی سپورٹ سے الحدیدہ کا ہوائی اڈہ آزاد کرا لیا تھا۔ اس کے بعد حوثی جنگجو وہاں سے فرار ہو گئے۔

ذرائع کے مطابق حوثی ملیشیا نے الحدیدہ شہر کے بعض ہوٹلوں اور عام اداروں میں نصب سکیورٹی کیمروں کو بھی طاقت کے زور پر ہٹوا دیا۔ اس دوران مقامی آبادی کو خبردار کیا گیا کہ باغیوں کے نقل و حرکت کے بارے میں کوئی اطلاع نہ دی جائے اور نہ ہی کوئی تصویر لی جائے۔ باغیوں کی جانب سے شہر کے مختلف رہائشی علاقوں میں خںدقیں کھودنے اور ٹینکوں اور بکتربند گاڑیوں کے بھیجے جانے کا سلسلہ جاری ہے۔ اس کے علاوہ بلند عمارتوں کی چھتوں پر مسلح نشانچیوں کو بھی تعینات کر دیا گیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حوثیوں کو یمنی فوج کی تیز پیش قدمی کے باعث شہر کے اندر اپنے خلاف عوامی مزاحمتی تحریک کا قوی اندیشہ ہے۔