.

شام : 2013ء کے بعد پہلی مرتبہ الحسکہ صوبہ "داعش" تنظیم سے پاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں امریکی حمایت یافتہ سیرین ڈیموکریٹک فورسز (ایس ڈی ایف) نے شمال مشرقی صوبے الحسکہ سے داعش تنظیم کی باقیات کو بھی نکال دیا ہے۔ یہ بات ایس ڈی ایف کے ذرائع اور شام میں انسانی حقوق کے نگراں گروپ المرصد نے ہفتے کو رات گئے بتائی۔
ایس ڈی ایف نے 2015ء سے شام کے شمال اور مشرق مین وسیع رقبے پر کنٹرول حاصل کر رکھا ہے۔

دوسری جانب المرصد گروپ کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمن نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ "ایس ڈی ایف نے الحسکہ صوبے میں تین مقامات پر کلیئرنگ کا عمل مکمل کر لیا جہاں داعش تنظیم کے ارکان تعینات تھے"۔ رامی کے مطابق 2013ء کے بعد پہلی مرتبہ الحسکہ صوبہ داعش تنظیم کے ہر قسم کے وجود سے مکمل طور پر پاک ہے۔

دوسری جانب ایس ڈی ایف کے میڈیا سینٹر کے سربراہ مصطفی بالی نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ 2013ء کے بعد پہلی مرتبہ الحسکہ صوبے کو مکمل طور پر آزاد کرا لیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ یکم مئی کو ایس ڈی ایف نے ملک کے مشرق میں داعش تنظیم پر اپنے حملے کے "حتمی" مرحلے کے آغاز کا اعلان کیا تھا۔

شام میں مارچ 2011ء سے خون ریز تنازع دیکھا جا رہا ہے جس کے آغاز کے بعد سے اب تک 3.5 لاکھ سے زیادہ افراد اپنی جانیں گنوا چکے ہیں۔ اس کے علاوہ ملک کے انفرا اسٹرکچر کو بھاری تباہی کا سامنا کرنا پڑا ہے جب کہ ملک کی آدھی سے زیادہ آبادی بے گھر ہونے یا نقل مکانی کی صورت میں اندرون اور بیرون ملک موجود ہے۔