.

سعودی عرب میں بنگلہ دیشی شہری کے اکرام کا سبب ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں جذبہ خیر سگالی کے اظہار کے سلسلے میں ایک مقامی شہری نے اپنے فارم پر 18 برس سے ایمان داری سے کام کرنے والے بنگلہ دیشی ملازم کو اعزاز و اکرام سے نوازا۔

حال ہی میں منظر عام پر آنے والی ایک وڈیو میں مذکورہ ملازم "ابو الکلام" سعودی عرب کے قومی لباس میں ملبوس نظر آ رہے ہیں۔ انہوں نے کمر پر خنجر کی بیلٹ بھی باندھ رکھی تھی۔ اس موقع پر سعودی مالک کی جانب سے منعقد محفل میں ابو الکلام نے کیک کاٹا جس پر ان کا نام لکھا ہوا تھا۔ بنگلہ دیشی ملازم کے دیگر ساتھی بھی محفل میں موجود تھے۔

سعودی شہری علی العبیوی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ "ابو الکلام نے 1420ہجری میں ہمارے پاس فارم پر کام شروع کیا تھا اور وہ مویشیوں کی دیکھ بھال کرتے ہیں۔ اس پورے عرصے میں وہ اپنے کام کے حوالے سے ایمان داری اور خلوص کی مثال رہے۔ ابو الکلام کے لیے اس محفل کو سجانے کا مقصد ان کے واسطے ممنونیت اور تشکر کا اظہار ہے۔ ابو الکلام نے محفل کی تصاویر اپنے اہل خانہ کو بھیجیں جو بہت مسرور تھے اور اپنے والد پر فخر کر رہے تھے"۔

العبیوی نے مزید کہا کہ "ہم سمجھتے ہیں کہ ابو الکلام ہم ہی میں سے ایک ہیں۔ انہوں نے ہمارے ساتھ ایک طویل وقت گزارا ہے۔ ان کے ساتھ محبّت اور احترام کا برتاؤ رہا اور وہ اس سے بھی زیادہ کے مستحق ہیں۔ ابو الکلام نے سعودی لباس پہنا جو ان کی اس ملک اور یہاں کے لوگوں سے محبّت کی علامت ہے"۔