.

شام : درعا صوبے میں بشار کی فوج کا نیا حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں چند گھنٹوں کے سکون اور خاموشی کے بعد جنوبی صوبے درعا میں کئی محاذوں پر جھڑپوں اور فضائی حملوں کا سلسلہ پھر سے شروع ہو گیا۔ یہ صورت حال شامی اپوزیشن کی جانب سے بعض علاقوں میں اُن مصالحتی اقدامات کو مسترد کرنے کے بعد سامنے آئی ہے جن کو روس نے مصالحتی معاہدوں کا نام دیا ہے۔

روس کے ساتھ مذاکرات کی ناکامی نے اپوزیشن گروپوں کو نفیر عام کے اعلان پر مجبور کر دیا۔ اس کا مقصد اپوزیشن کے زیر کنٹرول علاقوں کی جانب شامی فوج کی پیش قدمی کی کسی بھی کوشش کو پسپا کرنا ہے۔

شامی حکومت کی فوج اور اس کی ہمنوا ملیشیاؤں نے فضائیہ کی معاونت کے ساتھ ایک وسیع زمینی کارروائی کا آغاز کر دیا جس کا مقصد دو سمتوں سے طفس قصبے کی جانب پیش قدمی کرنا ہے۔

مبصرین کے مطابق طفس کی جانب اس پیش قدمی کا مقصد مغربی دیہی علاقے میں اپوزیشن کے زیر کنٹرول اراضی کو دو حصوں میں علاحدہ کر دینا ہے۔

ادھر شامی فوج فضائی دفاعی بریگیڈ کی سمت پیش قدمی کی کوشش کر رہی ہے تا کہ درعا کے علاقوں کا مکمل طور پر محاصرہ کیا جا سکے اور شہر کے مشرقی اور مغربی نواحی حصوں کے درمیان راستہ منقطع کیا جا سکے۔