پاسداران انقلاب کی آبنائے ہرمز بند کرنے کی دوبارہ دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب کے سربراہ جنرل محمد علی جعفری نے ایک بار پھر آبنائے ’ہرمز‘سے عالمی جہاز رانی روکنے کی دھمکی دی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ آبنائے ہرمز یا تو سب کے لیے کھلی رہے گی یا سب کے لیے بند کردی جائے گی۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کے مطابق جنرل علی جعفری نے صدر حسن روحانی کی ان تنبیہات کی تایید جن میں انہوں نے تین روز قبل خبردار کیا تھا کہ اگر عالمی منڈی میں ایران کے تیل کی شراکت روکنے کی کوشش کی گئی تو وہ آبنائے ہرمز بند کردیں گے۔

جنرل جعفری نے کہا کہ صدر حسن روحانی کا موقف ایرانی تیل پر امریکا کی عاید کردہ پابندیوں کا مقابلہ کرنا ہے۔ ہمارے دشمنوں کو یہ معلوم ہونا چاہیے کہ آبنائے ہرمز یا تو سب کے لیے ہوگی یا کسی کے لیے بھی نہیں ہوگی۔

قبل ازیں سوموار کو ایرانی صدر حسن روحانی نے کہا تھا کہ اگر ایران کو تیل برآمد کرنے کی اجازت نہیں ہوگی تو پورے خطے کوتیل کی سپلائی نہیں کرنی دی جائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکا ایران کے تیل کو عالمی منڈی تک پہنچانے سے نہیں روک سکتا۔ انہوں نے دھمکی آمیز لہجے میں امریکا کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ’تم ایران کے تیل کی برآمدات نہیں روک سکتے۔ اگرایسا کرسکتے ہو تو کر کے دکھائو، تم اس کے نتائج خود دیکھ لو گے‘۔

صدر حسن روحانی کے بیان کے بعد پاسداران انقلاب کے بیرون ملک سرگرم فیلق القدس کے سربراہ جنرل قاسم سلیمانی نے بھی دھمکی دی تھی کہ ایرانی تیل کی برآمدات روکنے کی سازشوں کا مقابلہ کرنے کے لیے پاسداران انقلاب کسی بھی کارروائی کے لیے تیار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں