عراق: بصرہ میں پولیس نے مظاہرین پر فائر نگ کردی، ایک ہلاک ، 8 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عراق کے جنوبی شہر بصرہ میں پولیس نے اتوار کو بنیادی خدمات اور ضروریات کی عدم دستیابی کے خلاف احتجاجی کرنے والے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے فائرنگ کردی ہے جس کے نتیجے میں ایک شخص ہلاک اور آٹھ زخمی ہوگئے ہیں ۔

بصرہ کے نواح میں واقع علاقوں کے مکین روزگار ، بجلی ، پانی اور دوسری بنیادی خدمات کی عدم دستیابی کے خلاف احتجاج کررہے تھے۔پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ فائرنگ سے آٹھ افراد زخمی ہوگئے ہیں جبکہ ایک مقامی میئر نے کہا ہے کہ پولیس کی فائرنگ سے مظاہرے میں شریک ایک شخص ہلاک اور تین زخمی ہوئے ہیں۔

بصرہ کے علاقے امام صادق سے تعلق رکھنے والے میئر یاسین البطاط نے کہا ہے کہ مظاہرین ملازمتوں اور بہتر بنیادی خدمات کے لیے بالکل جائز مطالبات کررہے تھے۔رائیٹرز کے مطابق مظاہرین بصرہ کے نزدیک واقع زرعی علاقوں سے تعلق رکھتے تھے۔انھوں نے مغربی قرنہ میں واقع آئیل فیلڈز کے نزدیک ایک شاہراہ پر احتجاجی ریلی نکالی تھی۔

بصرہ میں و اقع ان آئیل فیلڈز پر روسی کمپنی لک آئیل تعمیر وترقی کام کررہی ہے اور مغربی قرنہ آئیل فیلڈ کا انتظام ایکسن موبائل کے پاس ہے۔پولیس اور تیل حکام نے اعتراف کیا ہےکہ مظاہرین نے تیل کے ان کنووں کی سکیورٹی یا ان کے معمول کے کام میں کوئی رخنہ نہیں ڈالا تھا۔

واضح رہے کہ عراق کے جن علاقوں میں غیر ملکی کمپنیاں تیل نکالنے کا کام کررہی ہیں، وہاں مقامی قبائل اور کمیونٹیوں کے افراد ملازمتیں اور دیگر بنیادی سہولیات مہیا کرنے کے لیے گاہے گاہے احتجاج کرتے رہتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں