کویت: پارلیمنٹ پر دھاوا بولنے کے ملزمان کو 3 برس قید کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

کویت میں کورٹ آف کیسیشن نے اتوار کے روز اپنے فیصلے میں پارلیمنٹ میں داخلے کے مقدمے میں ملزمان کو 3 برس قید با مشقت کی سزا سنا دی۔ علاوہ ازیں رکن پارلیمنٹ محمد المطیر کی جانب سے کی جانے والی اپیل کو بھی قبول نہیں کیا گیا۔

مقدمے کا فیصلہ 6 مئی تک کے لیے محفوظ کر لیا گیا تھا۔ بعد ازاں اس کا اعلان 8 جولائی تک ملتوی کر دیا گیا۔

مقدمے کا تعلق اس واقعے سے ہے جب 16 نومبر 2011ء کو اپوزیشن کے سیکڑوں ارکان پارلیمنٹ کی عمارت میں داخل ہو گئے، انہوں نے وزیراعظم الشیخ ناصر محمد الصباح پر بدعنوانی کے الزامات عائد کیے اور ان کی فوری برطرفی کا مطالبہ کیا۔

الشیخ ناصر نے اس واقعے کے دو ہفتے بعد وزارت عظمی کے منصب سے استعفا دے دیا اور نئی حکومت تشکیل دے دی گئی۔ بعد ازاں کویت کے امیر الشیخ صاح الاحمد الصباح نے پارلیمنٹ کو تحلیل کرنے کا حکم جاری کیا اور نئے انتخابات کا مطالبہ کر دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں