.

شام کے شمال مغربی علاقے میں باغیوں کے حملے میں اسد نواز 27 فوجی اور جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے شمال مغرب میں واقع ساحلی صوبے اللاذقیہ میں باغیوں اور جنگجوؤں کے ایک مشترکہ حملے میں اسد نواز 27 فوجی اور جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں ۔

اس حملے کے ردعمل میں شامی فوج اور روس کے لڑاکا طیاروں نے ساحلی صوبے اللاذقیہ اور اس کے پڑوس میں واقع صوبے ادلب میں باغیوں کے زیر قبضے علاقوں پر بمباری کی ہے۔شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نےمنگل کو اطلاع دی ہے کہ سرکاری فوج کے حملے میں چار شہری مارے گئے ہیں۔

رصدگاہ کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمان کے مطابق باغیوں نے سوموار کی شب ترکی کی سرحد کے نزدیک واقع اللاذقیہ کے دو دیہات اور چیک پوائنٹس پر حملہ کیا تھا ۔اس کے بعد شدید جھڑپوں اور گولہ باری سے شامی فوج کے آٹھ افسروں سمیت ستائیس اتحادی جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

انھوں نے مزید بتایا ہے کہ شامی فوجیوں نے ایک گاؤں الطیرا پر قبضہ کر لیا ہے اور وہاں سے شامی فوج کے افسروں اور فوجیوں کو نکال باہر کیا ہے۔لڑائی میں اسد نواز ملیشیا کے 40 جنگجو زخمی ہوگئے ہیں جبکہ چھے باغی مارے گئے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں میں اللاذقیہ سے تعلق رکھنے والے مقامی باغی اور سخت گیر جنگجو شامل ہیں ۔ اللاذقیہ صدر بشارالاسد کا آبائی صوبہ ہے اور ان کی حکومت کا مضبوط گڑھ سمجھا جاتا ہے۔باغیوں کا گذشتہ تین سال میں اس ساحلی صوبے میں یہ سب سے بڑا حملہ ہے۔ اللاذقیہ ہی میں روس کے زیر انتظام فوجی اڈا حمیمیم واقع ہے۔