.

فلسطینی مصالحت: مصر ایک بار پھر امید کی کرن روشن کرنے کے لیے سرگرم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی خبر رساں ایجنسی "معا" کے مطابق فتح تحریک میں فلسطینی مصالحت سے متعلق امور کے ذمّے دار عزام الاحمد اور مصری انٹیلی جنس کے سربراہ عباس کامل کے درمیان ملاقات ہوئی ہے۔

ایجنسی نے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس موقع پر فتح تحریک کے ذمّے دار کو چند روز قبل قاہرہ میں حماس کے وفد کی ملاقات کے نتائج سے آگاہ کیا گیا۔

علاوہ ازیں مصالحت کو یقینی بنانے اور حالیہ انقسام کے خاتمے کے لیے سنجیدہ تجاویز پیش کی گئیں اور آئندہ مرحلے میں رابطے جاری رکھنے پر زور دیا گیا۔

فلسطینی ایجنسی کے مطابق عزام الاحمد اس ملاقات کے لیے اپنا بیروت کا دورہ کئی گھنٹوں کے لیے منقطع کر کے قاہرہ چلے گئے اور ملاقات کے بعد دوبارہ بیروت پہنچ گئے۔

فلسطینی تنظیموں فتح اور حماس نے گزشتہ برس اکتوبر میں مصر کی سرکاری سرپرستی میں ایک مصالحتی معاہدے پر دستخط کیے تھے۔

دونوں تنظیمیں اس امر پر متفق ہو گئی تھیں کہ فلسطینی حکومت غزہ پٹی اور مقبوضہ مغربی کنارے سمیت تمام فلسطینی اراضی میں کام کرے گی۔ تاہم کچھ عرصے بعد دونوں تنظیموں کے درمیان مصالحت کو معطّل کرنے کے حوالے سے الزامات کا تبادلہ ہوا۔ بعد ازاں مصر نے فتح اور حماس کو ایک بار پھر ملاقاتوں کے دوبارہ آغاز کی دعوت دی ہے۔