درعا: داعش تنظیم پر حملوں کے دوران 26 شامی شہری جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شام میں انسانی حقوق کے نگراں گروپ المرصد کے مطابق جنوبی شام کے صوبے درعا میں داعش تنظیم کے زیرِ قبضہ علاقے پر شدید فضائی بم باری کی گئی۔

المرصد کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمن نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ جمعے کے روز روسی اور شامی جنگی طیاروں نے درعا کے جنوب مغرب میں دیہی علاقے "حوض الیرموک" کو پورے دن حملوں کا نشانہ بنایا۔ اس علاقے پر داعش تنظیم سے تعلق رکھنے والے ایک گروپ فصیل خالد بن الولید" کا کنٹرول ہے۔ کارروائی کے نتیجے میں 26 شامی شہری اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے جن میں 11 بچے بھی ہیں۔ ان کے علاوہ درجنوں افراد زخمی بھی ہوئے جن میں بعض کی حالت نازک ہے۔

المرصد کا کہنا ہے کہ حملوں میں کئی دیہات اور قصبے فضائی حملوں اور بیرل بم کے دھماکوں کی لپیٹ میں آئے جن میں تسيل، حيط، سحم الجولان اور الشجرہ شامل ہیں۔

مسلسل بم باری کے نتیجے میں انفرا اسٹرکچر کو بڑی تباہی کا سامنا کرنا پڑا اور بعض علاقے مکمل طور پر برباد ہو گئے۔

عسکری آپریشن اور تصفیے کے معاہدے کے ذریعے درعا صوبے کا 90 فی صد حصّہ واپس لینے کے بعد اب شامی حکومت کی فوج کے لیے صرف داعش تنظیم کے زیر قبضہ کچھ علاقوں کو کنٹرول میں لینا باقی رہ گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں