صعدہ: یمنی فوج باقم ضلع سے محض چند میٹر کے فاصلے پر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

العربیہ نیوز چینل کے نمائندے کے یمن کے صوبے صعدہ میں سرکاری فوج عرب اتحاد کی مدد سے باقم ضلعے کے اندر داخل ہونے کے قریب پہنچ چکی ہے۔

یمنی فوج کے خصوصی بریگیڈ 102 کے کمانڈر بریگیڈیر جنرل یاسر الحارثی نے العربیہ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ فوج نے باقم ضلعے کے مرکز کو تمام سمتوں سے گھیرے میں لے لیا ہے اور گزشتہ ہفتے شروع ہونے والے فوجی آپریشن کا اختتام قریب آ چکا ہے۔

الحارثی کے مطابق یمنی فوج باقم ضلعے میں داخل ہونے سے چند میٹر کی دُوری پر ہے۔

الحارثی نے واضح کیا کہ حوثیوں کی کمر ٹوٹ چکی ہے جس نے باغیوں کو مجبور کر دیا ہے کہ وہ اپنی صفوں میں موجود بچوں کو لڑائی کے محاذوں پر جھونکیں۔

ادھر یمنی فوج نے عرب اتحاد کی فورسز کی معاونت سے صعدہ کے شمال میں باقم ضلعے کے مغرب میں واقع تزویراتی نوعیت کے متعدد ٹھکانوں کو واپس لے کر ان پر مکمل کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔ یہ پیش رفت حوثی ملیشیا کے ساتھ گھمسان کی لڑائی کے بعد سامنے آئی۔

عسکری کمانڈر کے مطابق عرب اتحاد کی معاونت سے یمنی فوج اور سکیورٹی فورسز نے باقم ضلعے کے مرکز کے مغرب میں حوثی ملیشیا کی دراندازی کی کوشش ناکام بنا دی۔ فوج کے جوابی حملے میں باقم ضلعے کے مرکز کے مغرب میں بقیہ ماندہ علاقوں کو بھی واپس لے لیا گیا۔ مذکورہ ذریعے نے واضح کیا کہ اس دوران باغیوں کو بھاری جانی اور مادی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں