.

ایران کے خلاف امریکی پابندیوں پر عمل درامد نہیں کریں گے: ترکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کے وزیر خارجہ مولود چاوش اوگلو نے اعلان کیا ہے کہ اُن کے ملک نے امریکی عہدے داران کو آگاہ کر دیا ہے کہ وہ ایران پر امریکی پابندیوں کی مخالفت کرتا ہے اور ترکی ان پابندیوں کو لاگو کرنے کا پابند نہیں ہے۔

منگل کے روز آذربائیجان میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اوگلو کا کہنا تھا کہ "ہم کسی ایک ملک کی جانب سے دوسرے ملک پر مسلط کی جانے والی پابندیوں کو پورا کرنے پر مجبور نہیں اور ہم ان پابندیوں کو درست بھی نہیں سمجھتے"۔

انہوں نے مزید کہا کہ "ہم نے انقرہ میں امریکا کے ساتھ کئی اجلاس منعقد کیے اور ان کو صاف طور پر آگاہ کر دیا کہ ہم آذربائیجان، ایران، روس اور عراق سے تیل اور گیس حاصل کرتے ہیں۔ اگر ہم اب ایران سے یہ نہیں خریدیں تو پھر ہماری ضرورت کس طرح پوری ہو گی؟".

گزشتہ ہفتے ایک امریکی وفد نے ترکی کا دورہ کیا تھا۔ دورے کا مقصد ایران پر پابندیوں اور خطّے میں ایران کی دہشت گردی کے حوالے سے انقرہ کے ساتھ بات چیت کرنا ہے۔