.

شام: السویداء اور اس کے نواحی دیہات میں خود کش دھماکے، متعدد افراد ہلاک اور زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں انسانی حقوق کے نگراں گروپ المرصد کے مطابق داعش تنظیم کی جانب سے شام کے جنوب میں السویداء شہر اور اس کے نواحی علاقے کو سلسلہ وار خود کش دھماکوں کا نشانہ بنایا گیا۔ ان دہشت گرد حملوں میں عام شہریوں سمیت 40 افراد جاں بحق ہو گئے۔

المرصد کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمن کے مطابق مارے جانے والوں میں شامی حکومت کی فورسز کے کم از کم 26 ہمنوا مارے گئے ہیں جب کہ زخمیوں کی تعداد 30 سے زیادہ ہے۔

رامی عبدالرحمن نے بتایا کہ صرف السویداء شہر میں ہی بارودی بیلٹوں کے ذریعے تین دھماکے کیے گئے۔ اس کے علاوہ شہر کے مشرقی اور شمال مشرقی نواحی دیہات میں بھی دیگر دھماکے ہوئے ہیں۔

بشار حکومت کی فوج کو جنوبی شام کے صوبے السویداء پر مکمل کنٹرول حاصل ہے جب کہ صوبے کے شمال مشرقی اطراف میں صحرائی علاقے میں داعش تنظیم کے عناصر پائے جاتے ہیں۔ یہ افراد وقتا فوقتا بشار کی فوج کو حملوں کا نشانہ بناتے ہیں۔

رامی عبدالرحمن کے مطابق السویداء شہر میں نشانہ بنایا جانے والا علاقہ گنجان آباد ہے۔ انہوں نے بتایا کہ داعش تنظیم نے جن سات دیہات پر حملہ کیا تھا ان میں سے تین دیہات پر وہ قبضہ کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے۔

دوسری جانب شامی سرکاری خبر رساں ایجنسی SANA نے السویداء شہر میں ہلاکتوں اور زخمیوں کی تصدیق کی ہے۔ سرکاری ٹی وی نے بھی السویداء کے شمال مشرقی دیہات پر حملوں میں متعدد لوگوں کے ہلاک اور زخمی ہونے کی خبر دی ہے۔

رامی عبدالرحمن کا کہنا ہے کہ علاقے میں جن ٹھکانوں کی جانب دہشت گرد پیش قدمی کر رہے ہیں ان ٹھکانوں کو لڑاکا طیاروں کے ذریعے نشانہ بنایا جا رہا ہے تاہم یہ نہیں معلوم کہ آیا یہ طیارے شامی حکومت یا روسی فضائیہ کے ہیں۔

ادھر داعش تنظیم سے بیعت کرنے والا ایک گروپ السویداء کے متوازی درعا صوبے کے جنوب مغرب میں ایک چھوٹی سی پٹی پر قابض ہے۔ یاد رہے کہ شامی فوج دو جنوبی صوبوں درعا اور قنیطرہ کے بڑے حصرے کو واپس کنٹول میں لے چکی ہے۔