شام میں طویل مدت کے لیے روسی فوج کی ضرورت ہے: بشارالاسد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شامی صدر بشارالاسد نے کہا ہے کہ ان کے ملک میں طویل مدت کے لیے روسی فوج کی ضرورت ہے اور اس کی خدمات کی صرف دہشت گردی کے خلاف جنگ ہی نہیں ، دوسرے امور کے لیے بھی درکار ہیں۔

روسی خبررساں ایجنسیوں کے مطابق شامی صدر نے یہ بات جمعرات کو ایک انٹرویو میں کہی ہے۔انٹر فیکس نیوز ایجنسی نے اس انٹرویو کا مختصر متن جاری کیا ہے۔اس کے مطابق بشارالاسد نے کہا کہ شام میں مہاجرین کی تیزی سے واپسی دمشق اور ماسکو کے درمیان بات چیت کا ایک اہم موضوع اور ایشو ہے۔

شامی صد ر نے ملک میں جاری جنگ ، بم دھماکوں اور لڑاکا طیاروں کے فضائی حملوں میں شہریوں کو ابتدائی طبی امداد دینے اور ان کی جانیں بچانے کے لیے کام کرنے والے رضا کار گروپ ’’وائٹ ہیلمٹس‘‘ کے ارکان کو بھی سخت دھمکی آمیز پیغام دیا ہے۔انھوں نے کہا کہ اگر ’وائٹ ہیلمٹس‘ کے کارکنان نے عام معافی کی پیش کش کو قبول کرنے سے انکار کیا تو ان کا بھی تمام دہشت گردوں کی طرح قلمع قمع کردیا جائے گا۔

انھوں نے کہا کہ ’’ملک شمال مغربی صوبے ادلب اور دوسرے علاقوں میں جہاں کہیں دہشت گرد موجود ہیں ، ان کے خلاف کارروائی شامی فوج کی سرگرمیوں میں اولین ترجیح ہوگی‘‘۔ واضح رہے کہ بشار الاسد ، ان کی حکومت اور اتحادی ممالک روس اور ایران تمام شامی باغیوں کو بلا تفریق دہشت گرد قرار دیتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں