ایران: سبز تحریک کے رہ نماؤں کی عنقریب آزادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایران میں حزب اختلاف کی سبز تحریک کے ایک رہ نما مہدی کروبی کے بیٹے حسین کروبی کا کہنا ہے کہ ایرانی قومی سلامتی کی سپریم کونسل نے مہدی کروبی، میر حسین موسوی اور اُن کی اہلیہ زہراء رہنورد کو رہا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یاد رہے کہ تینوں شخصیات 8 برس سے نظربندی کا شکار ہیں۔

حسین کروبی نے ہفتے کے روز بتایا کہ اگر ایرانی نظام کے رہبر اعلی علی خامنہ ای نے مخالفت نہ کی تو مذکورہ فیصلے پر 10 روز کے دوران عمل درامد ہو جائے گا۔ بعض ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ فیصلے میں سابق صدر اور اصلاح پسند رہ نما محمد خاتمی پر عائد میڈیا پابندی اٹھا لینا بھی شامل ہے۔

حسین کروبی کے مطابق اس منصوبے کے ناخدا ایرانی صدر حسن روحانی کے نائبِ اوّل اسحاق جہانگیری ہیں اور اس کا مقصد "ایرانی نظام کے دھڑوں کو یکجا کرنا اور داخلی ڈھانچے کو منظّم کرنا ہے"۔ ایرانی تجزیہ کاروں کے نزدیک یہ اقدامات رہبر اعلی علی خامنہ ای کی جانب سے ایک نئے سیاسی کھیل کے واسطے فضا سازگار بنانے کے لیے کیے جا رہے ہیں تا کہ وہ ملک کے اندر گھٹن کے ماحول میں کمی لانے کے حوالے سے خود کو عالمی برادری کے سامنے نمایاں کر سکیں۔

حسین کروبی نے اسحاق جہانگیری کے حالیہ بیان کا حوالہ بھی دیا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ "آنے والے دنوں میں صفوں کو متحد کرنے کی خاطر ملک کی اہم اور نمایاں شخصیات کو اکٹھا کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے"۔

دوسری جانب "اعتماد ملّی" پارٹی جس کے سربراہ مہدی کروبی ہیں اُس کے ایک رہ نما الیاس حضرتی نے انکشاف کیا ہے کہ جہانگیری نے سابق ایرانی صدر محمد خاتمی پر عائد پابندیوں کے خاتمے کے امکان کا عندیہ دیا ہے۔

ایرانی تجزیہ کاروں کے مطابق ان تصرفات کا مقصد یہ ہے کہ یورپی ممالک کے ساتھ جوہری معاہدے کے باقی رہنے کے حوالے سے مذاکرات ناکام ہونے کی صورت میں موسوی اور کروبی کو روحانی کی حکومت کے متبادل کے طور پر لایا جائے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ خامنہ ای کا مقصد ملک میں داخلی نظام کے دھڑوں کے بیچ بڑھتے ہوئے تنازع پر قابو پانا ہے بالخصوص حالیہ عوامی احتجاجی مظاہروں کے بعد۔

تاہم اپوزیشن اور اقتدار میں شامل کئی حلقوں کے نزدیک اقتصادی اور معاشی بحرانات کے سائے میں معاملات بند گلی تک پہنچ گئے ہیں جب کہ بدعنوانی اور بے روزگار افراد کی فوج پھیل چکی ہے۔

اس سلسلے میں اصلاح پسند رہ نما اور خاتمی کی حکومت میں وزیر معیشت کے سابق معاون مہدی صفائی فراہانی کا کہنا ہے کہ سبز تحریک کے رہ نماؤں کی نظربندی ختم کرنے یا خاتمی پر سے پابندیاں اٹھا لینے سے "ملک کی سنگین مشکلات ہر گز حل نہ ہوں گی"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں