.

سمندری جہاز رانی کو محفوظ بنانے کی کوششیں جاری رکھیں گے: عرب اتحاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی کا کہنا ہے کہ ایران کی جانب سے باب المندب اور بحر احمر میں جہاز رانی کو دھمکانے کا سلسلہ جاری ہے۔

ریاض میں پیر کے روز ایک پریس کانفرنس میں گفتگو کرتے ہوئے المالکی نے باور کرایا کہ عرب اتحاد بحر احمر میں جہاز رانی کو محفوظ بنانے کے لیے کوششیں جاری رکھے گا۔

ترجمان نے زور دے کر کہا کہ یمن میں عسکری کارروائیوں کا مقصد آئینی حکومت کی واپسی اور بالا دستی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی جانب سے یمن میں حوثی ملیشیا کی کارستانیوں کو نظرانداز کیا جا رہا ہے جیسا کہ حوثیوں نے التحیتا میں پانی کے ہائیڈرینٹ کو دھماکے سے تباہ کر دیا۔

ترکی المالکی کے مطابق عرب اتحاد کی جانب سے کیے جانے والے تمام اقدامات بین الاقوامی اور انسانی قوانین سے موافقت رکھتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ حوثی ملیشیا نے شہری علاقوں کو عسکری ٹھکانوں میں تبدیل کر دیا ہے۔

عرب اتحاد کے ترجمان نے باور کرایا کہ یمن کا صوبہ صعدہ ایرانی بیلسٹک میزائل داغے جانے کا پلیٹ فارم بن چکا ہے۔

المالکی نے بتایا کہ یمن میں 22 زمینی ، بحری اور فضائی راستے اب بھی کام کر رہے ہیں۔ حوثی ملیشیا نے امدادی بحری جہازوں کا داخلہ معطّل کرنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔

المالکی نے اس امر کی تصدیق کی کہ شاہ سلمان امدادی مرکز کی جانب سے بھیجی گئی امداد سے 50 لاکھ سے زیادہ یمنی مستفید ہو رہے ہیں۔