.

شاہ سلمان تعطیلات گذارنے ’نیوم‘ پہنچ گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود تعطیلات گذارنے کے لیے سوموار کے روز نیوم روانہ ہو گئے۔ وہ اپنے اہل خانہ کے ہمراہ چند رز تک وہاں قیام کریں گے۔

خیال رہے کہ ’نیوم‘ کو سعودی عرب کا جدید ترین سیاحتی شہر قرار دیا جاتا ہے۔ دیگر ممالک کے اشتراک سے اس شہر کو آئندہ چند برسوں کے دوران سیاحت کے شعبے کا’ماڈل سٹی‘ بنانے کا منصوبہ روبہ عمل ہے۔

سعودی ولی عہد کی مساعی سے نیوم کو سعودی عرب کے شمالی مغربی علاقے کی سرحد ، اردن اور مصر کے اشتراک سے آزاد تجارتی اور سیاحتی شہربنانے کے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔

منصوبے کی تکمیل کے بعد سالانہ 1.4 ملین سیاح نیوم کا وزٹ کریں گے۔گذشتہ دس برسوں کے دوران سعودی شہریوں کی بڑی تعداد نے نیوم کا رخ کرنا شروع کیا ہے اور انہوں نے سیاحتی شعبے پر 580.7 ارب ڈالر خرچ کیے ہیں۔

منفرد موسم اور آب وہوا کی وجہ سے نیوم کو نہ صرف سعودی عرب بلکہ خطے کے دوسرے ملکوں کا بہترین سیاحتی مقام قرار دیا جاتا ہے۔ یہاں درجہ حرارت بھی سیاحت کے لیے مثالی ہے اور متعدل درجہ حرارت سیاحوں کو اپنی طرف کھینچ رہا ہے۔

سعودی عرب کی شمال مغربی سرحد پر واقع نیوم شہر 2500 کلو میٹر تک پھیلا ہوا ہے۔ سردیوں میں یہ شہر برف کی چادر اوڑھ لیتا ہے۔