.

مشرق وسطی کا سب سے بڑا "ہیکاتھون" ایونٹ حجاج کرام کے تجربے کو آسان بنائے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے شہر جدہ میں مشرق وسطی کا سب سے بڑا Hackathon ایونٹ منعقد کیا جا رہا ہے۔ آج بدھ سے شروع ہونے والے تین روزہ ایونٹ میں 51 سے زیادہ ملکوں کے ہزاروں مرد اور خواتین ڈیولپرز شرکت کر رہے ہیں۔

اس اہم ایونٹ کا انتظام "سعودی فیڈریشن فار سائبر سکیورٹی ، پروگرامنگ اینڈ ڈرونز" کی جانب سے کیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں منگل کے روز ایک افتتاحی تقریب بھی منعقد ہوئی تا کہ سعودی عرب کی جانب سے بیت اللہ کے مہمانوں کی خدمت کو جاری رکھتے ہوئے نوجوان صلاحیتوں سے فائدہ اٹھایا جا سکے۔ اس کے علاوہ حج ٹکنالوجی کی دریافت اور ترقی میں خواتین کی شرکت کو نمایاں کیا جائے۔

سعودی سابر فیڈریشن کا کہنا ہے کہ اس کا مقصد ہے کہ پروگرامنگ کے میدان میں اعلی ترین ذہانت کے حامل افراد کو کشش دلا کر ٹکنالوجی پر مشتمل ایسے حل دریافت کیے جائیں جو حجاج کرام کے تجربات کو بھرپور انداز سے بہتر بنائے۔

واضح رہے کہ یہ منصوبہ ایجادات کے ساتھ ٹکنالوجی میں علاقائی اور عالمی قیادت کو متحرک کرنے کے حوالے سے مملکت سعودی عرب کے عزم و ارادے کا حصّہ ہے۔ اس کا مقصد باصلاحیت نوجوانوں کو سپورٹ کرنا، ان کے لیے مواقع فراہم کرنا اور سعودی ویژن 2030 پروگرام کے اہداف کو حاصل کرنا ہے۔

حج ہیکاتھون کے پہلے ایڈیشن میں سعودی عرب ، خلیجی ممالک اور دنیا بھر سے مرد اور خواتین ڈیولپرز شرکت کر رہے ہیں اور اب تک کم از کم 20 ہزار افراد کا اندراج ہو چکا ہے۔