.

عالمی برادری کی طرف سے باب المندب کا تحفظ کر رہے ہیں: عرب اتحاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کے لیے سرگرم عرب عسکری اتحاد نےکہا ہے کہ عرب اتحاد یمن کی باب المندب بندرگاہ اور جنوبی بحر الاحمر کے تحفظ کے لیے عالمی برادری کے نائب کے طور پر کام کر رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ باب المندب کی حفاظت عالمی اورعلاقائی ذمہ داری ہے مگر اس کے باوجود عرب اتحاد عالمی برادری کی نیابت میں باب المندب کے تحفظ کے لیے کام کر رہا ہے۔

عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے ایک بیان میں کہا کہ آبنائے باب المندب بین الاقوامی تجارتی راستہ اور تیل کی عالمی سپلائی کا بحری روٹ ہے۔ اگر باب المندب میں تیل بردار جہازوں اور دیگر تجارتی جہازوں کو خطرات لاحق ہوتے ہیں تو اس کے نتیجے میں پوری عالمی برادری متاثر ہوسکتی ہے۔ عرب اتحاد اپنے حصہ کی ذمہ دار نبھانے کے ساتھ ساتھ عالمی برادری کی طرف سے بھی آبنائے ہرمز کے تحفظ کے لیے کوشاں ہے۔

جمعہ کی شام الریاض میں ایک پریس کانفرنس میں کرنل المالکی نے کہا کہ الحدیدہ میں بحری جہاز پر حملہ بندرگاہ کے انتظامات میں حوثیوں کی ناکامی کا کھلا ثبوت ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ الحدیدہ کے مغربی ساحل پر حوثیوں کی سرگرمیاں عالمی برادری کے تجارتی مفادات کے لیے خطرہ ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ یمن میں حوثیوں کی بغاوت کے نتیجے میں 2 کروڑ 20 لاکھ یمنی شہری براہ راست متاثر ہوئے ہیں۔