’روئیت ہلال عید‘ سعودی ماہر فلکیات کیا کہتے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب میں 11 اگست بہ روز ہفتہ ذی الحج کا چاند دیکھا جائے گا۔ روئیت ہلال کے حوالے سے حوطہ سدیر میں المجمعہ یونیورسٹی کے زیراہتمام رصدگاہ سے جدید الیکٹرانکس آلات، بڑی ٹیلی اسکوپوں اور چھوٹی دوربینوں کی مدد سے چاند دیکھنے کی کوشش کی جائے گی۔

حوطہ سدیر میں قائم رصدگاہ کے ڈائریکٹر اور ماہر فلکیات عبداللہ الخضیری نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ 29 ذی القعدہ کو ’ام القریٰ‘ کیلینڈ کے مطابق ذی الحج کا چاند دیکھا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ اس روز ملک کے بیشتر علاقوں میں مطلع صاف، درجہ حرارت 34 درجے سینٹی گریڈ اور شمال مشرق کی سمت سے چلنے والی ہوائیں 13 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلیں گی۔ گردو غبار اڑنے کا خدشہ نہیں۔ مغربی افق کےبعض مقامات کے ؎سوا ملک کے بیشتر علاقوں میں موسم صاف ہوگا۔

الخضیری نے کہا کہ جامعہ المجمعہ کی جانب ہر قمری مہینے کا چاند دیکھنے کا اہتمام کیا جاتا ہے مگر ذی الحج کاچاند دیکھنے کے لیے خاص اہتمام ہوتا ہے۔ اس کہ وجہ یہ ہے کہ چاند دیکھنے کے بعد حج کےایام کا تعین، یوم عرفہ، عید الاضحیٰ کا تعین کیا جاتا ہے۔ اگرچہ سعودی عرب میں عام شہریوں کو بھی چاند دیکھنے کی اجازت ہے مگر چاند نظرآنے یا نہ آنے کا اعلان سپریم کورٹ کرتی ہے۔

ایک سوال کے جواب میں سعودی ماہر فلکیا نے کہا کہ طلوع غروب آفتاب وماہتاب کو سامنے رکھیں تو گیارہ اگست بہ روز ہفتہ سورچ شمال مشرقی میں 73 کے زاویے پر 5:30 پر طلوع ہوگا جب کہ چاند شمال مشرق میں 72 کے زاویے کے مطابق پانچ بج کر 12 منٹ پر طلوع ہوگا۔ دونوں کے مرکزی ملاپ کا وقت اسی روز 12 بج کر 58 منٹ ہے۔ اس روز سورج چھ بج کر 36 منٹ پر غروب ہوگا جب کہ چند کے غروب ہونے کا وقت چھ بج کر 48 منٹ ہے۔ گویا سورج کے غریب ہونے کے صرف 12 منٹ بعد تک سعوی عرب کی فضاء میں چاند دیکھا جاسکے گا۔ سائنسی ماہرین اور فلکیات دانوں کے مطابق چاند سورج کی مغربی سمت میں ہوسکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں